The news is by your side.

Advertisement

آدھے سر کا درد : چکر کیوں آتے ہیں؟ علامات اور علاج

سر میں درد کا رہنا تو عام بیماری ہے ہی لیکن کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جنہیں سر کے آدھے حصے میں شدید درد کی شکایت ہوتی ہے، ی ہایک بیماری ہے اور اس مرض کی کئی وجوہات ہوسکتی ہیں۔

آدھے سر کے درد کو عرف عام میں درد شقیقہ بھی کہا جاتا ہے، درد شقیقہ کے حوالے سے مشہور ہے کہ یہ مردوں کی نسبت خواتین میں بکثرت پایا جاتا ہے اور ایک حالیہ تحقیق کے مطابق یہ مرض 15 فیصد کی شرح سے دنیا بھر میں موجود ہے۔

اس بیماری کی وجہ سے روزمرہ کے کاموں میں تاخیر اور زندگی میں اکتاہٹ محسوس ہوتی ہے، یہ درد عموماًکسی پریشانی کے نتیجے میں نمودار ہوتا ہے۔

اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں دماغی امراض و اعصابی نظام کی بیماریوں کے ماہر نیورولوجسٹ پروفیسرعارف ہری کار نے سننے والوں کو درد شقیقہ کی وجوہات اور اس کے علاج سے متعلق اہم مشورے دیے۔

انہوں نے بتایا کہ آدھے سر کا درد خون کی شریانوں کے بڑھنے اور اعصاب سے کیمیائی مادوں کے ان شریانوں میں ملنے سے پیدا ہوتا ہے اس کے دورے کے دوران ہوتا یہ ہے کہ کنپٹی کے مقام پر جلد کے نیچے رگ پھول جاتی ہے۔

اس کے نتیجے میں کچھ کیمیائی مادے پیدا ہوکر سوجن اور درد کے ذریعے رگ کو اور پُھلا دیتے ہیں جس سے دفاع میں اعصابی نظام متلی، پیٹ کی خرابی اور قے کا احساس پیدا کرتا ہے۔

آدھے سر کے درد کی وجوہات میں لمبا سفر، بلند مقام پر کھڑے ہونا، تیز روشنی، بلند آوازیں، تیز خوشبو، کسی وقت کا کھانا چھوڑنا، بے خوابی اور وہ کھانا جس میں ٹیرامائن موجود ہو، شامل ہیں۔

علاوہ ازیں اس مرض کی وجہ سے خوراک کے ہضم ہونے کا عمل بھی سست پڑ جاتا ہے، پروفیسرعارف ہری کار نے بتایا کہ لمبے سفر پر جانے سے پہلے ایک دوا کی ایک خوراک لازمی لیں اور تیز بھول نہ لگنے تک کھانا نہ کھائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں