مسلمان ہوں کسی اور کی رقم نہیں رکھ سکتا،جرمنی میں پناہ گزین شامی نوجوان -
The news is by your side.

Advertisement

مسلمان ہوں کسی اور کی رقم نہیں رکھ سکتا،جرمنی میں پناہ گزین شامی نوجوان

برلن:25 سالہ شامی پناہ گزین نوجوان نے الماری کی صفائی کے دوران ملنے والی ایک لاکھ پچاس ہزار یورو کی رقم پولیس کو واپس کردی۔

غیر ملکی خبر ایجینسی کے مطابق برلن میں موجود پناہ گزین 25 سالہ شامی نوجوان کو ایک رفاحی ادارے کی جانب سے فرنیچر دیا گیا تھا،فرنیچر میں ملنے والی الماری کی صفائی کے دوران شامی پناہ گزین کو ایک لاکھ یورو کی مالیت کے سیونگ بکس اور 50 ہزار یورو نقد ملے، پاکستانی روپوں میں یہ رقم ایک کروڑ 74 لاکھ بنتی ہے۔

شامی نوجوان پناہ گزین جو دیار غیر میں پیسوں کی کمی اور سہولیات کے فقدان کا شکار بھی ہو،کو اتنی بڑی رقم ہاتھ لگی لیکن اس غیور نوجوان نے اپنی مجبوریوں کو پس پشت ڈال کر پولیس کو اطلاع دی اور رقم یہ کہہ کر پولیس کے حوالے کردی کہ “میں مسلمان ہوں،کسی اور کے پیسے نہیں رکھ سکتا”۔

پولیس حکام نے میڈیاکو بتایا کہ معمولی رقم کی واپسی تو ہوتی رہتی ہے تا ہم ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ اتنی بڑی رقم ہاتھ آجانے کے با وجود واپس لوٹا دی گئی وہ بھی اُس شخص کی جانب سے جو خود پناہ گزین ہے اور اس کے پاس خرچے کے پیسے تک نہیں۔

امانت دار شامی پناہ گزین کا نام معلوم نہیں ہو سکا ہے تا ہم اطلاعات یہ ہیں کہ 25 سالہ شامی نوجوان گزشتہ سال اکتوبر میں جرمنی میں پناہ لینے آیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں