site
stats
سندھ

شاہ جو رسالو امن کا پیغام اور موسیقی کا اہم امتزاج ہے، تائیوان یونیورسٹی کی طالبہ

بھٹ شاہ : تائیوان یونیورسٹی کی طالبہ نے کہا ہے کہ بھٹ شاہ کا کلام اتنا محسور کن اور پُرتاثیر ہے جس نے مجھے عرس کی تقریبات میں شرکت کے لیے پاکستان آنے پر مجبور کردیا, شاہ جو رسالو امن کا پیغام اور موسیقی کا اہم امتزاج ہے۔

ان خیالات کا اظہار تائیوان سے بھٹ شاہ آنے والی طالبہ فیلنگ فونگ شاہ عبداللطیف بھٹائی کے عرس کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، تائیوان کی طالبہ نے بتایا کہ وہ شاہ راگ پر تحقیق کر رہی ہو جس کے لیے بھٹ شاہ سے بہترین مقام نہیں۔

تائیوانی طالبہ نے کہا کہ تحقیق کے دوران شاہ عبداللطیف بھٹائی کا کلام پڑھنے کا موقع ملا جس نے مجھ پر حیرتوں کے دروازے وا کردیئے اور انسانیت کے درمیان محبت پھیلانے والے شاہ صاحب موسیقی کی دنیا کا بھی بڑی نام ہے۔

تائیوانی طالبہ نے اعتراف کیا کہ شاہ عبدلالطیف کی دھنوں میں بھی امن ، پیار اور یگانگت کے سُر ملتے ہیں اور ایسے دیدہ ور شخص کی درگاہ پر حاضری کو اپنی خوش نصیبی سمجھتی ہوں۔

فیلنگ فونگ کا کہنا تھا کہ اپنے دورے کے دوران شاہ صاحب کے عقیدت مندوں سے بھی ملاقات ہوئی ہے جن سے کافی کچھ سمجھنے کو ملا ہے اور وہ علمی دشواریاں دور ہو رہی ہیں جن کا نصاب پڑھتے ہوئے سامنا کرنا پڑتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ سندھ کے لوگ مہمان نواز ہیں اور ان کے آدابِ میزبانی سے کافی متاثر ہوئی ہوں جن کا کلچر منفرد اور جن کہ تہذیب قدیم روایتوں کی امین ہے اور میں اپنے ملک جا کر اپنے ہم جماعت دوستوں کو بھٹ شاہ مزار جانے اور روحانیت کو سیکھنے کو مشورہ دوں گی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top