The news is by your side.

Advertisement

آنگ سانگ سوچی سے نوبیل انعام واپس لینے کا مطالبہ، آن لائن پیٹیشن پر3 لاکھ سے زائد افراد کے دستخط

میانمار : امن کا نوبیل انعام پانے والی میانمارکی رہنما آنگ سانگ سوچی سے نوبل انعام واپس لینے کا مطالبہ زورپکڑنے لگا، دوسری جانب مختلف ملکوں میں روہنگیا مسلمانوں کے حق میں مظاہرے جاری ہیں۔

تفصیلات کے مطابق امن کا نوبل انعام پانے والی آنگ سانگ سوچی روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام کیخلاف آواز اٹھانے کے بجائے خاموش ہیں آنگ سانگ سوچی کی خاموشی پرلوگ خاموش نہ رہ سکے۔

آن لائن پیٹیشن میں سوچی سے نوبل پرائز واپس لینے کا مطالبہ کردیا، سوچی سے نوبل انعام واپس لینے کی پیٹیشن پراب تک تین لاکھ سے زائد افراد دستخط کرچکے ہیں اور یہ سلسلہ جاری ہے۔

دوسری جانب روہنگیا مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لئے مختلف ملکوں میں احتجاج کیا جارہا ہے، بھارت کے شہر کولکتہ میں مظاہرین نے برتن اور پلے کارڈز اٹھا کر احتجاج کیا۔

انڈونیشیامیں مظاہرین نے میانمار کے سفیر کو ملک سے نکالنے کا مطالبہ کیا۔

انڈونیشیا کی وزیرخارجہ نے آنگ سانگ سوچی سے ملاقات کی اور روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام رکوانے کیلئے کردار ادا کرنے پر زور دیا۔


مزید پڑھیں : برما: 7 دن میں 400 روہنگیا مسلمان قتل، 40 ہزار گھروں کو چھوڑ گئے


یاد رہے کہ اگست میں میانمار حکومت کی جانب سے اگست میں فوجی آپریشن شروع کیا گیا، فسادات میں برما کی آرمی اور بودھوں نے 400 سے زائد روہنگیا مسلمانوں کو قتل کردیا، 87000روہنگیا بنگلہ دیش ہجرت کرنے پرمجبور ہوئے جبکہ 2800گھرجلا دئیے گئے۔

میانمارحکومت نے اقوام متحدہ کی امداد بھی روک لی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں