The news is by your side.

Advertisement

طالبان نے ترکی سے مدد مانگ لی

کابل : طالبان نے ترکی سے کابل ایئرپورٹ کو کنٹرول کرنے میں مدد مانگ لی تاہم ترک حکام کا کہنا ہے کہ طالبان کی درخواست پرحتمی فیصلہ 31 اگست کی ڈیڈلائن کے بعد کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق افغان میڈیا کا کہنا ہے کہ طالبان نےترکی سےکابل ائیرپورٹ چلانے کیلئے مدد مانگ لی اور غیر ملکی فوج کےانخلا کے بعدبھی ائیرپورٹ پر تیکنیکی مدد فراہم کرنے کی استدعا کی ہے۔

افغان طالبان کا کہنا ہے کہ ترک فوج کو بھی 31 اگست کی ڈیڈلائن پر انخلا کرنا ہوگا ، جس پر ترک حکام نے آمادگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ فوج کے انخلا کیلئے تیار ہیں تاہم طالبان کی درخواست پرحتمی فیصلہ 31 اگست کی ڈیڈلائن کے بعد کریں گے۔

دوسری جانب ترک وزیر دفاع نے کہا ہے کہ ترکی نے کابل ائیرپورٹ سے اپنی فوج کا انخلا شروع کردیا ہے، طالبان کی پیشکش کے کچھ دیر بعد ہی ترکی نے اپنی فوج کا انخلا شروع کیا ہے ، آج 345 فوجی انقرہ پہنچ گئے ہیں۔

ترک وزیر دفاع نے تعاون پر پاکستان اور تاجکستان کا شکریہ ادا کیا۔

خیال رہے امریکا، برطانیہ اور آسٹریلیا نے کابل ایئر پورٹ پر دہشت گردانہ حملے کے “شدید خطرے” کی وارننگ دیتے ہوئے شہریوں کو فی الحال کابل ہوائی اڈے کا رخ نہ کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

نیٹو کے ایک رکن ملک کے سفار ت کار نے خبر رساں ایجنسی روئٹرز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ طالبان نے ہوائی اڈے کے باہر سکیورٹی کی یقین دہانی کرائی ہے تاہم داعش کی جانب سے حملے کے خطرے کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں