The news is by your side.

Advertisement

افغانستان: شدت پسندوں کا حملہ، 25 سیکیورٹی اہلکار ہلاک

کابل: افغانستان میں چیک پوائنٹ پر دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں 25 سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق دہشت گردوں نے افغان صوبے ضابل میں سیکیورٹی چیک پوائنٹ کو نشانہ بنایا۔ حملے میں پولیس اہلکاروں اور فوجی جوانوں سمیت 25 افراد مارے گئے۔

افغان صوبے ضابل کے علاقے قلات میں قائم چیک پوسٹ پر فوجی اہلکار بھی موجود تھے جو حملے کی زد میں آگئے۔ صوبائی حکومتی ترجمان عطا جان کا کہنا ہے کہ مذکورہ حملہ طالبان کی جانب سے ہوسکتا ہے۔

حملے کی ذمے داری تاحال کسی شدت پسند گروہ نے قبول نہیں کی۔ دہشت گرد حملے کے بعد ملیٹری گاڑیاں اور اہلکاروں کے اسلحے بھی ساتھ لے گئے۔ حکومت نے منہ توڑ جواب دینے کے لیے فوجی آپریشن کا آغاز کردیا ہے۔

افغان امن معاہدہ کے بعد امریکا کا طالبان پر پہلا حملہ ، طالبان ملٹری کمیشن چیف ہلاک

خیال رہے کہ تاریخی امن معاہدے کے بعد امریکی فوج نے 4 مارچ کو طالبان پر پہلا حملہ کیا تھا، حملے کے نتیجے میں طالبان ملٹری کمیشن کے چیف سمیت تین طالبان مارے گئے تھے۔

واضح رہے کہ امریکا اور افغان طالبان کے درمیان تاریخی امن معاہدہ ہوچکا ہے۔ امن معاہدہ 4نکات پر مشتمل ہے، معاہدے کے مطابق امریکا 14ماہ میں افغانستان سے تمام فوجی واپس بلالے گا، افغان سرزمین امریکا اور اتحادیوں پر حملے کے لیے استعمال نہیں ہوگی۔

مشترکہ اعلامیے کے مطابق امریکا افغانستان کی علاقائی سالمیت کے خلاف طاقت کے استعمال سے بھی باز رہے گا، امریکا معاہدے کے 135دن کے اندر فوجیوں کی تعداد 8600 تک لائے گا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں