The news is by your side.

Advertisement

افغان طالبان کا وفد 6 اکتوبر تک پاکستان میں قیام کرے گا، ذرائع

اسلام آباد : افغان طالبان کاوفد6اکتوبرتک پاکستان میں قیام کرے گا، اس دوران امریکی نمائندہ خصوصی  زلمےخلیل زاد سے بھی ملاقات ہوگی ، افغان طالبان وفد،وزیرخارجہ میں مفاہمتی عمل کی بحالی پر اتفاق رائے کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ افغان طالبان کا وفد 6 اکتوبر تک پاکستان میں قیام کرےگا، افغان طالبان اور امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد میں ملاقات دورے کے دوران ہوگی، ملاقات میں افغان مفاہمتی عمل کی بحالی پر بات چیت ہوگی۔

یاد رہے اسلام آباد میں پاکستان اورافغان طالبان کے وفد کے درمیان دفترخارجہ میں مذاکرات ہوئے تھے ، دونوں فریقین کے درمیان وفود کی سطح پر سوا گھنٹے تک مذاکرات جاری رہے، مذاکرات میں خطےکی صورتحال، افغان امن عمل اور باہمی دلچسپی کےامور پرتبادلہ خیال کیا گیا اور فریقین نے مذاکرات کی جلد بحالی کی ضرورت پربھی اتفاق کیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا تھا پاکستان افغان امن عمل کیلئے مصالحانہ کردار ادا کرتارہےگا جبکہ افغان طالبان نے پاکستان کے مصالحانہ کردار کی تعریف کی۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پرامن افغانستان خطے کے استحکام کیلئے ضروری ہے، افغان امن کیلئے مذاکرات ہی مثبت اور واحد راستہ ہے، خواہش ہے فریقین مذاکرات کی جلد بحالی پر تیار ہو جائیں۔

خیال رہے کہ طالبان کے سیاسی دفتر کا اعلیٰ سطحی وفد ملا عبدالغنی برادر کی سربراہی میں رات دیر گئے قطر کے دارالحکومت دوحہ سے اسلام آباد پہنچا تھا ، افغان طالبان کا وفد چین، روس اور ایران کے بعد پاکستان کا دورہ کررہا ہے۔

واضح رہے افغانستان میں امن کے لئے امریکا اورافغان طالبان کے درمیان امن مذاکرات دوحہ میں ہورہے تھے جو کچھ عرصے سے تعطل کا شکار ہیں، افغانستان میں حملے میں امریکی فوجی کی ہلاکت پر امریکی صدر نے مذاکرات معطل کردیئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں