The news is by your side.

Advertisement

افغانستان: عسکریت پسندوں نے دھمکی دے کر درجنوں اسکول بند کرادیے

کابل: افغانستان میں موجود طالبان شدت پسندوں نے سنگین نتائج کی دھمکی دیتے ہوئے درجنوں اسکول بند کرا دیے۔

تفصیلات کے مطابق افغان طالبان کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ افغانستان کے شمالی صوبے ’تخار‘ کے تمام اسکول بند کیے جائیں بصورت دیگر سنگین نتائج کے ذمہ دار حکام ہوں گے۔

افغان حکام کا کہنا ہے کہ طالبان عسکریت پسندوں کے اس اعلان سے اسکول میں زیر تعلیم ہزاروں کی تعداد میں طلبہ متاثر ہوں گے جبکہ تخار میں طالبان کے اعلان کے بعد تمام کے تمام اسکول جن میں ستائیس پرائمری اور سیکنڈری اسکول شامل ہیں انہیں مکمل طور پر بند کر دیا گیا ہے۔

حکام کا یہ بھی کہنا تھا کہ افغان صوبے تخار میں فورسز کی جانب سے کارروائیاں کی جارہی ہیں، گذشتہ دنوں شدت پسندوں کے ایک اہم لیڈر کو بھی گرفتار کیا گیا تھا، جبکہ اسکول بند کرانے کا یہ دھمکی آمیز عمل افغان فورسز کی کارروائیوں کا ردعمل ہوسکتا ہے۔


افغانستان: طالبان کے دو دہشت گرد حملے، سکیورٹی فورسز سمیت 5 افراد جاں بحق


خیال رہے کہ افغانستان حالیہ چند ہفتوں سے عسکریت پسندوں کے دہشت گردانہ حملوں کے نشانے پر ہے، گذشتہ دنوں بھی یکے بعد دیگرے دو دہشت گرد حملے کیے گئے تھے جس کے نتیجے میں درجنوں افراد اپنی زندگی کی بازی ہار گئے تھے۔

یاد رہے کہ 23 مئی کو افٖغانستان کے صوبے غزنی میں طالبان عسکریت پسندوں نے متعدد حملے کر کے 14 پولیس اہلکاروں کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا جبکہ متعدد زخمی بھی ہوگئے تھے۔


افغان صوبے غزنی میں طالبان کا حملہ، افسران سمیت 14 پولیس اہلکار ہلاک


علاوہ ازیں 23 مئی کو ہی افغانستان کے شہر قندھار میں مکینک ورک شاپ پر ایک زور دار دھماکہ ہوا تھا جس کے نتیجے میں 16 عام شہری مارے گئے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں