The news is by your side.

Advertisement

پاکستان اور آئی ایم ایف کے مذاکرات شروع، حکومت معاہدے کیلیے پُرامید

پاکستان اور عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے مذاکرات دوحہ میں شروع ہو گئے۔ پروگرام کے ساتویں جائزہ مشن کا آغاز وزیرخزانہ کی مشن چیف سے ملاقات سے ہوا۔ وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نےآئی ایم ایف کےمشن چیف سےمیٹنگ کی۔

وزیرخزانہ اور وزیر مملکت اگلے ہفتے کے اوائل میں ٹیم کے ساتھ شامل ہوں گے حکومتی ٹیم پروگرام کی کامیابی کیلئے آئی ایم ایف کیساتھ معاہدے پر دستخط کیلئے پُرامید ہے۔

وزیرخزانہ نے پروگرام کےتحت تجویز اصلاحات، دیگراقدامات کےعزم کا اعادہ کیا۔ آئی ایم ایف مشن چیف نے معیشت کو چیلنجز پر آئی ایم ایف کےجائزےکا تبادلہ کرتے ہوئے مشن چیف کامعیشت کیلئےفوری اورطویل مدتی اقدامات پرزور دیا۔

وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ حکومت موجودہ معاشی مشکلات کوسمجھتی ہے متوسط اورکم آمدنی گروپوں پرافراط زرکےاثرات کم کرنا ہوں گے افراط زرکےاثرات کم کرنے کیساتھ سخت فیصلے کرنے ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ معاشی صورتحال متاثر کرنے والے عوامل قابو سے باہر ہیں سپلائی شاکس،کموڈٹی سپرسائیکل اور روس یوکرین تنازع مسائل ہیں ایسےعوامل کی وجہ سے اجناس کی قیمتیں مزیدبڑھ گئی ہیں یہ عوامل کرنٹ اکاؤنٹ کیساتھ زرمبادلہ خائرپردباؤ ڈال رہےتھے۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کمزور طبقوں کیساتھ معیشت پر بوجھ کو کم کرنے اقدامات کرے گی مسائل حل کر کے مالیاتی خسارے کو ختم اور پائیدار ترقی کیلئےپرعزم ہیں۔

وزیرخزانہ نےعالمی معیشت کیلئےمشکل وقت میں آئی ایم ایف کی حمایت پرشکریہ اداکیا۔ دونوں فریقوں نے جائزے کو کامیابی سےمکمل کرنےمیں گہری دلچسپی ظاہرکی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں