The news is by your side.

مفتی تقی عثمانی فائرنگ کیس، ایک اور زخمی دم توڑ گیا، تعداد تین ہوگئی

کراچی: مفتی تقی عثمانی پر حملے میں زخمی ہونے والے مولانا عامر شہاب جناح اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے، فائرنگ کے واقعے میں جاں بحق ہونے والی کی تعداد تین تک پہنچ گئی۔

ڈاکٹر سیمی جمالی کے مطابق فائرنگ کے واقعے میں عامر شہاب جسم کے بالائی حصے پر گولیاں لگی تھیں اور وہ جناح اسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں زیر علاج تھے۔ مولانا عامر شہاب مفتی تقی عثمانی کے ڈرائیور تھے اور واقعے کے روز وہ ہی گاڑی چلا رہے تھے۔

یاد رہے کہ 22 مارچ کو گلشن اقبال کے علاقے میں واقع نیپا چورنگی کے قریب دو گاڑیوں پر فائرنگ کا واقعہ پیش آیا تھا ایک میں مفتی تقی عثمانی کے محافظ اور ایک ڈرائیور تھے جو اُسی روز جاں بحق ہوگئے تھے۔

مزید پڑھیں: کراچی: مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے کی تحقیقات میں اہم پیش رفت

مفتی تقی عثمانی اپنی اہلیہ اور دو پوتوں کے ہمراہ گلشن اقبال میں واقع مسجد بیت المکرم میں نماز جمعہ کا خطبہ دینےکے لیے جارہے تھے کہ اُسی دوران فائرنگ کا واقعہ پیش آیا تھا۔ سانحے میں مفتی شہاب کے بیٹے اور بیت المکرم مسجد کے خطیب مولانا عامر شہاب اللہ شدید زخمی ہوئے تھے۔

جناح اسپتال کی ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی نے تصدیق کی تھی کہ وہاں دو افراد کولایا گیا۔ صنوبر خان مردہ حالت میں اسپتال لائے گئے جبکہ مولانا عامر کی حالت بھی انتہائی تشویش ناک بتائی ہے۔

ڈاکٹر سیمی جمالی کا کہنا تھا کہ مفتی شہاب متعدد گولیاں لگیں، جناح اسپتال کے ڈاکٹر انہیں علاج کی ہر ممکن سہولت فراہم کرے گی، مفتی شہاب کو وینٹی لیٹر پر رکھا گیا تھا۔

تحقیقات میں پیشرفت

تحقیقاتی ادارں نے مفتی تقی عثمانی پر قاتلانے حملے میں استعمال ہونے والے اسلحے کو فرانزک ٹیسٹ کے لیے بھیجا تھا جس کی رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی کہ اسلحہ پہلی بار کسی واردات میں استعمال ہوا۔

یہ بھی پڑھیں: مولانا تقی عثمانی حملہ کیس میں کچھ اشارے ملےہیں، جانتے ہیں کون لوگ ملوث ہیں؟آئی جی سندھ

رپورٹ میں بتایا گیا تھاکہ حملہ آوروں نے واردات میں 2 نائن ایم ایم پستول استعمال کیے، ایک پستول سے 9 جبکہ دوسرے سے 6 گولیاں چلائی گئیں۔ رپورٹ کے مطابق حملہ آوروں نے تین 125 سی سی موٹر سائیکلیں استعمال کیں، ملزمان نے مفتی تقی عثمانی کا سنگر چورنگی سے پیچھا شروع کیا اور 16 منٹ تک پیچھے آنے کے بعد نیپا چورنگی کے قریب فائرنگ کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں