The news is by your side.

Advertisement

القاعدہ کو امریکا ہی لایا تھا،امریکیوں کوحقیقت وقت کےساتھ بتانا ہوگی، تسنیم اسلم

اسلام آباد : سابق پاکستانی دفتر خارجہ کی ترجمان تسنیم اسلم نے کہا کہ  وزیراعظم کادورہ امریکا  بہت اہمیت کاحامل ہے، دنیا وزیراعظم عمران خان کو سننا چاہتی ہے ، القاعدہ کو امریکا ہی لایا تھا۔

تفصیلات کے مطابق سابق پاکستانی دفتر خارجہ کی ترجمان تسنیم اسلم نےعمران خان کے دورہ امریکا کے حوالے سے کہا کہ اقوام متحدہ میں دنیا بھر سے رہنما ایک جگہ جمع ہیں، وزیراعظم کادورہ بہت اہمیت کاحامل ہے، دنیا وزیراعظم عمران خان کو سننا چاہتی ہے۔

تسنیم اسلم کا کہنا تھا کہ القاعدہ کوامریکاہی لایاتھا،م داعش کوخطےمیں کون لایا، روس بتا چکا ہے، امریکیوں کوحقیقت وقت کےساتھ بتانا ہوگی۔

سابق پاکستانی دفتر خارجہ کی ترجمان نے کہا کہ امریکاکےکردارمیں ہمیشہ دہرارہا ہے، امریکااپنےمفادات کیلئےکام کرتاہے، مودی کے جلسے کو ٹرمپ نے الیکشن کیلئے استعمال کیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ امریکا کو ثالثی میں شامل نہیں کرنا چاہیے۔

یاد رہے گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان اورامریکی صدرڈونلڈٹرمپ کی ملاقات ہوئی ، جس میں افغانستان کی صورتحال ، بھارت اورمقبوضہ کشمیرکی صورتحال پربات چیت ہوئی۔

مزید پڑھیں : عمران خان اور ٹرمپ ملاقات ، مسئلہ کشمیرپرایک مرتبہ پھرثالثی کی پیشکش

امریکی صدرنےمسئلہ کشمیرپرایک مرتبہ پھرثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا میں اپنی ثالثی کی پیشکش پر قائم ہوں، اگرمیری پیشکش سے مسئلہ حل ہوتا ہے تو میں تیارہوں۔

اس سے قبل عمران خان نیو یارک میں فارن ریلیشن کونسل میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا تھا کہ نائن الیون کے بعد پاکستان کا دہشت گردی کی جنگ کا حصہ بننا تاریخی غلطی تھی، 2008 میں امریکا آ کر کہا تھا افغانستان کا کوئی جنگی حل نہیں، امریکا کو افغانستان میں امن کے لیے اپنی فوج نکالنا ہوگی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں