site
stats
بزنس

پراپرٹی سیکٹرکیلئے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم لانے کا فیصلہ

اسلام آباد : ملک بھر میں ٹھپ پڑے اربوں روپے کے پراپرٹی سیکٹر کیلئے حکومت نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم لانے کا فیصلہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق جائیدادوں کی قیمتوں کے تعین کے نئے سرکاری طریقہ کار سے ملک بھر میں پراپرٹی کا کاروبارٹھپ پڑا ہے، جس پر پورے ملک میں احتجاج بھی کیا جارہا ہے، حکومت کو بھی رئیل اسٹیٹ کے شعبے سے ٹیکس وصولی میں کمی کا سامنا ہے۔

ذرائع کے مطابق موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے حکومت نے ایف بی آر کو پراپرٹی سیکٹر کیلئے ون ٹائم ٹیکس ایمنسٹی اسکیم لانے کی اجازت دے دی ہے۔

اس حوالے سے کراچی، لاہور، فیصل آباد اور اسلام آباد سمیت ملک بھر کے رئیل اسٹیٹ کےشعبےمیں رضاکارانہ ٹیکس ادائیگی اسکیم لانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔


مزید پڑھیں :  پراپرٹی کی اضافہ شدہ قیمت میں ہر سال 10فیصد اضافہ کرنے پر اتفاق


اسکیم کے تحت پراپرٹی کی حقیقی قیمت پر تین فیصد ٹیکس دینے والے سے ذریعہ آمدن نہیں پوچھا جائیگا، اسکیم کی حتمی منظوری قومی اسمبلی کےآئندہ اجلاس میں متوقع ہے۔

اس سے قبل تعمیراتی شعبے کی نمائندہ تنظیم آباد کے قائم مقام چیئرمین عارف یوسف جیوا کے مطابق حکومت کی جانب سے جائیداد کی ویلیو ایشن کے نوٹیفیکیشن پرعمل درآمد نہ ہونے سے قومی خزانے اُور پراپرٹی بزنس سے وابستہ افراد کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوچکا ہے، جس کے ازالے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں

واضح رہے کہ پاکستان بھر میں پراپرٹی کے یکساں اور مارکیٹ قیمت کے مطابق قیمتیں مقرر کرنے کےلیے وفاقی حکومت کی جانب سے اقدامات کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

ایف پی سی سی آئی اور کرا چی چیمبر پراپرٹی ویلیو ایشن ٹیبل کو مسترد کر تے ہوئے کہا ہے کہ یہ موجودہ سسٹم ناقابل قبول ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top