The news is by your side.

Advertisement

‏’ٹیکس محصولات 4700 ارب ہوں گے‘‏

وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ ٹیکس محصولات رواں مالی سال کےآخرمیں 4700 ارب ہوں گے۔

ترجمان وزارت خزانہ نے ن لیگ کے رہنما مفتاح اسماعیل کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے واضح کیا ‏ہے کہ آئی ایم ایف پروگرام چل رہا ہے اور اگست میں ایک سال کی معاشی کارکردگی کاجائزہ لیا ‏جائےگا۔

ترجمان نے کہا کہ حکومت اصلاحات کی پابندہے اور کورونا کے باوجود اصلاحات جاری رکھیں، مارچ ‏‏2021 میں تمام جائزوں کومکمل کیاگیا کہ ٹیکس محصولات رواں مالی سال کےآخرمیں 4700ارب ہوں ‏گے جب کہ ن لیگ حکومت کےآخری سال 3862ارب روپےٹیکس جمع ہوا تھا۔

ترجمان نے بتایا کہ رواں مالی سال زرمبادلہ کےذخائر 23.4ارب ڈالرہوئے جب کہ ن لیگ ‏کےدورمیں زرمبادلہ کےذخائر 16.4ارب تھے۔ اسی طرح کرنٹ اکاؤنٹ خسارےکو 20ارب ‏ڈالرسےکم کیا، اب ایک ارب ڈالرکرنٹ اکاؤنٹ سرپلس ہوگیا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ پرائمری خسارہ جی ڈی پی کا 3.8فیصدتھا ،اب 1.1فیصدپرلایاگیا، شرح سود ‏‏7فیصد پر لائی گئی جو جولائی 2018میں 7.5فیصد تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں