کمسن ملازمہ پر تشدد کا معاملہ: بچی کے والدین نے راضی نامہ کرلیا -
The news is by your side.

Advertisement

کمسن ملازمہ پر تشدد کا معاملہ: بچی کے والدین نے راضی نامہ کرلیا

اسلام آباد: حاضر سروس جج کی گھریلو ملازمہ پر مبینہ تشدد کا ڈراپ سین ہوگیا۔ کمسن بچی کے دعویدار والدین نے جج سے راضی نامہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں 10 سالہ گھریلو ملازمہ طیبہ پر تشدد کے معاملے نے یو ٹرن لے لیا۔ حاضر ایڈیشنل جج راجا خرم علی خان اور ان کی اہلیہ کے خلاف کمسن ملازمہ پر تشدد کا مقدمہ درج تھا۔ معصوم بچی کے چہرے پر زخموں کے نشان نے میڈیا میں ہلچل مچادی تھی۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کے حکم پر تشدد کرنے والے جج کے خلاف انکوائری جاری تھی کہ بچی کے والدین نے جج سے راضی نامہ کرلیا۔

والدین کی جانب سے معافی نامے کا بیان حلفی عدالت میں پیش کیا گیا۔ والد کا بیان ہے کہ بغیر کسی دباؤ کے راضی نامہ کر لیا گیا ہے۔ مقدمہ میں جج کو فی سبیل اللہ معاف کردیا ہے۔

والد نے تحریری بیان میں یہ بھی لکھا ہے کہ جج کو بری کرنے یا ضمانت دینے پر مجھے کوئی اعتراض نہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں