The news is by your side.

Advertisement

کراچی کی نجی یونیورسٹی کے استاد نے کمال کردیا

کراچی : نجی یونیورسٹی کے نوجوان استاد میں گھر میں تجربہ گاہ قائم کرکے نہ صرف طلبہ کی مفت تعلیم و تربیت کا آغاز کرکے اعلیٰ مثال قائم کردی۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کے معاشی حب کراچی سے تعلق رکھنے والے استاد علم دوستی اور حب الوطنی کا ثبوت اپنے گھر میں قائم کردہ تجربہ گاہ کے ذریعے دے دیا۔

انجیئنر محمد عمیر عارف نامی استاد نے اپنے گھر میں ایسی تجربہ گاہ بنائی ہے جہاں انہوں نے نہ صرف اپنے رفقاء کے ہمراہ مصنوعی ذہانت (آرٹیفیشل انٹیلیجنس) ٹیکنالوجی پر کام شروع کیا بلکہ طلبہ کو مفت تعلیم بھی فراہم کررہے ہیں اور ساتھ ساتھ انہیں ہنر سے بھی نواز رہے ہیں۔

نمائندہ اے آر وائی کا کہنا ہے کہ محمد عمیر عارف نے اپنے گھر میں قائم کردہ تجربہ گاہ میں اب تک کئی آلات بھی تیار کرچکے ہیں۔

محمد عمیر عارف کی قائم کردہ تجربہ گاہ میں کم لاگت اور سفری استعمال میں آسان وینٹی لیٹر بنایا گیا ہے، اسی طرح ایسے سیکیورٹی کیمروں پہ بھی کام کیا گیا ہے جو غیر متعلقہ شخص کی تصاویر عکس بند کرکے فوراً موبائل فون پر بھیج دیتے ہیں۔

نجی یونیورسٹی کے استاد کی تجربہ گاہ میں ایسے ڈرون بھی بنائے گئے ہیں جو دور دراز مقامات پہ ادویات کی ترسیل کرسکتے ہیں اور اس کام کے لیے کسی فرد کی نہیں بلکہ ایک خود کار کمپیوٹر پروگرام کی ضرورت ہوگی۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ایک نوجوان نے بتایا کہ انہیں تعلیم کیساتھ تجربات کا بھی موقع مل رہا ہے جو مستقبل میں ان کے لیے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں