The news is by your side.

Advertisement

سرگودھا: ٹیچر کا 8 سالہ طالبہ پر تشدد، سر کے بال کاٹ دیے

سرگودھا: صوبہ پنجاب کے شہر سرگودھا میں اسکول ٹیچر نے تیسری جماعت کی 8 سالہ طالبہ کو تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے اس کے بال کاٹ دیے، محکمے کے افسران نے والد کی شکایت سننے سے انکار کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق افسوسناک واقعہ سرگودھا کے علاقے شاہ پور میں پیش آیا، جہاں گرلز اسکول میں ٹیچر نے تیسری جماعت کی طالبہ کو تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے بچی کے بال کاٹ دیے۔

ذرائع کے مطابق متاثرہ بچی کی عمر 8 سال ہے جو نواحی گاؤں بھاگڑ پنڈی کے رہائشی سکندر حیات کی بیٹی ہے۔ عائشہ کو ٹیچر نے تشدد کا نشانہ بنایا اور استفسار پر ٹیچر نے بچی پر دوبارہ تشدد کرتے ہوئے اس کے بال بھی کاٹ دیے۔

والد کی جانب سے شکایت پر ہیڈ ماسٹر نے انہیں دھمکیاں دیں جبکہ ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر زنانہ نے معاملہ کی تحریری درخواست پر بھی کوئی نوٹس نہیں لیا۔ طالبہ کے والد سکندر حیات نے ضلعی انتظامیہ اور اعلیٰ حکام سے واقعہ کی تحقیقات کر کے ذمہ داران کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ طلبا پر تشدد کا یہ پہلا واقعہ نہیں، پاکستان میں‌ طلبا پر تشدد قانوناً جرم ہے اس کے باوجود اس نوع کے واقعات میں کمی واقع نہیں ہوئی۔

گزشتہ ماہ لاہور میں رائیونڈ گورنمنٹ ایلمنٹری اسکول دربار بابا رحمت شاہ میں بھی ایک ٹیچر نے بچی پر بہیمانہ تشدد کرتے ہوئے اس کے سر پر ڈنڈا دے مارا تھا، جس سے طالبہ بے ہوش ہوگئی۔

حالت غیر ہونے پر اساتذہ نے 9 سال کی سحرش کو فوری طورپر مقامی اسپتال منتقل کر دیا تھا، والدین کے اسپتال پہنچنے پر اسکول انتظامیہ بچی کو چھوڑ کر چلی گئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں