The news is by your side.

Advertisement

کشیدگی میں اضافہ، امریکی فوجی اڈے پر ایک اور حملہ

لامو: عراقی دارالحکومت بغداد کے بعد کینیا میں بھی امریکی فوجی اڈے پر حملہ ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق کینیا کے ساحلی شہر لامو میں فوجی اڈے پر حملہ ہوا۔ شدت پسند تنظیم الشہاب نے حملے کی ذمے داری قبول کرلی تاہم اس حملے کے بعد ایران امریکا کشیدگی میں اضافے کا امکان ہے۔

غیر ملکی خبررساں ادارے نے دعویٰ کیا ہے کہ اس حملے کا الزام بھی ایران پر عائد کیا جاسکتا ہے۔ ٹرمپ انتطامیہ اس حملے کو ایرانی جنرل کی ہلاکت کا ردعمل بھی قرار دے سکتی ہے۔

کینیا کے ساحلی شہر لامو میں فوجی بیس میں امریکا اور کینیا کے اہلکار موجود تھے۔ تاہم اس حملے میں ہلاکتوں کی اطلاعات اب تک نہیں آئیں، البتہ یہ امکان ظاہر کیا گیا ہے کہ حملے میں فوجی اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔

بغداد، امریکی ائیربیس پر راکٹ‌ حملے

خیال رہے کہ گزشتہ روز بغداد سے 50 میل مسافت پر واقع بلد ایئربیس پر دو راکٹ فائر کے گئے تھے جو امریکی ائیر بیس کے اندر گرے تھے، ایئربیس پر امریکی فوجی تعینات ہیں، راکٹ فائر ہونے کے نتیجے میں پانچ افراد زخمی ہوئے البتہ ابھی تک کسی جانی نقصان کی اطلاع سامنے نہیں آئی۔

رپورٹ کے مطابق فائر کیے گئے راکٹ کاٹیوشا ساخت کے تھے جو پہلی بار سوویت یونین نے بنائے اور انہیں جنگ عظیم دوئم میں پہلی بار بڑے پیمانے پر استعمال کیا گیا۔

یاد رہے کہ امریکا نے ایک روز قبل بغداد ائیرپورٹ پر فضائی حملہ کر کے ایران کی القدس فورس کے جنرل قاسم سلیمانی کو ہلاک کردیا تھا، ایرانی حکومت نے امریکی حملے کی مذمت کرتے ہوئے بدلہ لینے کا اعلان کیا تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں