The news is by your side.

Advertisement

چار دن میں دہشت گردی کے7واقعات، 106 افراد شہید اور درجنوں زخمی

کراچی : لاہور سے سیہون شریف تک دہشت گردی کا جن بے قابو ہوگیا، چار دن میں دہشت گردی کے 7واقعات میں ایک سو چھ افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں، ججوں اور عام شہریوں کو نشانہ بنایا۔

تفصیلات کے مطابق دہشت گردی کی تازہ لہر کا آغاز لاہور سے ہوا، پیر کو پنجاب اسمبلی کے باہر چیئرنگ کراس پر خودکش حملہ آور نے مظاہرین کے درمیان خود کو دھماکے سے اڑالیا، دہشت گردی میں سات پولیس اہلکاروں سمیت چودہ افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے۔

lahore

اسی رات کوئٹہ میں دہشت گرد سریاب روڈ پل کے نیچے بم رکھ گئے، بم ناکارہ بنانے کوشش میں پھٹ گیا، بی ڈی ایس انچارج عبدالرزاق اور ان کا ساتھی اہلکار شہید ہوگئے۔

quetta-1

منگل کو پشاور میں ہائی کورٹ کے ججوں کی وین پر موٹرسائیکل ٹکرا کر خودکش حملہ کیا گیا، جس کے نتیجے میں ڈرائیور شہید جبکہ تین خواتین سمیت چار جج زخمی ہوگئے۔

peshwa

اسی روز مہمند ایجنسی میں دو حملوں میں اہلکاروں سمیت چھ افراد کو شہید کردیا گیا۔

333

گزشتہ روز بلوچستان کے علاقے آواران میں پاک فوج کے قافلے کے قریب بارودی سرنگ کا دھماکا کیا گیا، جس میں کیپٹن طحہ سمیت تین سیکیورٹی اہلکار شہید ہوگئے، شہید ہونے والے اہلکاروں میں سپاہی کامران ستی اور مہتر جان شامل ہیں ۔

6666

جس کے کچھ دیر بعد لال شہبازقلندر کے مزار کو لہو لہو کردیا گیا، خود کش حملے کے نتیجے میں 20بچوں اور نو خواتین سمیت 76 افراد شہید جبکہ ایک سو تیس سے زائد زخمی ہوئے،حملہ اس وقت ہوا جب قلندر کےدیوانے دھمال ڈالنے میں مگن تھے کہ اچانک خوفناک دھماکہ ہوگیا۔

qalendar

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں