The news is by your side.

دہشت گردی کا مقدمہ: پولیس کو عمران خان کی گرفتاری سے روک دیا گیا

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے دہشت گردی کے مقدمے میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کی تین روز کے لیے راہداری ضمانت منظور کرلی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کیخلاف دہشتگردی کے مقدمے میں درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ عمران خان کی درخواست ضمانت پراعتراض ہے، جس پر عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے دلائل دیتے ہوئے کہا پولیس نے عمران خان کے گھر کا گھیراؤ کررکھا ہے۔

بابر اعوان نے بتایا کہ عمران خان ٹرائل کورٹ میں پیش ہونا چاہتے ہیں لیکن عمران خان اگر عدالت آتے ہیں تو پولیس گرفتارکرلے گی، استدعا ہے حفاظتی ضمانت منظور کی جائے۔

جس پر جسٹس محسن اخترکیانی نے ریمارکس دیے ابھی تو پٹیشن انٹرٹین نہیں ہوئی عدالت کو اس پراعتراض ہے۔

جس پر عمران خان کے وکیل نے کہا انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج چھٹی پر ہیں، اسی وجہ سے ہائی کورٹ سے رجوع کیا۔

جسٹس محسن اخترکیانی نے کہا اعتراض ہے بائیومیٹرک نہیں کرایا گیا، جس پر بابراعوان نے کہا پولیس نے عمران خان کے گھرکا گھیراؤ کر رکھا ہے، وہ یہاں کیسے آسکتے ہیں۔

بعدازاں عدالت نے درخواست پر اعتراض ختم کرتے ہوئے اسلام آباد پولیس کو عمران خان کی گرفتاری سے روک دیا۔

عدالت نے عمران خان کی 25 اگست تک راہداری ضمانت منظور کرلی اور عمران خان کو انسداد دہشت گردی کی عدالت سے رجوع کرنے کا حکم دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں