site
stats
پاکستان

تھرپارکر میں زیر علاج مزید 3 بچےدم توڑ گئے

تھرپارکر: ایک بار پھر بھوک اور بیماری جیت گئی، سول اسپتال مٹھی میں زیر علاج مزید3 بچےدم توڑ گئے، رواں سال اموات کی تعداد 69 ہوگئی ہے.

ترجمان محکمہ صحت کے مطابق 2 روز کے دوران سول اسپتال مٹھی میں زیرعلاج 3  بچےدم توڑ گئے ہیں ، واضح رہے کہ رواں ماہ کے دوران 18 بچے انتقال کرگئے ہیں ، جبکہ رواں سال اموات کی تعداد 69 ہوگئی ہے ، خیال رہے کہ تا حال 16 اسپتال میں بچے زیرعلاج ہیں.

واضح رہے کہ گذشتہ سال کی طرح رواں سال بھی غذائی قلت اور ناکافی طبی سہولیات کے باعث تھرپارکرمیں بچوں کی اموات کا سلسلہ جاری ہے۔ ماہ جنوری میں تین ماؤں کی گود سونی ہو گئی تھی ، اسپتال ذرائع کا کہنا تھا ہلاک ہونے والوں میں 16 دن کی آمنہ، ڈیڑہ ماہ کی زائیہ ظہور اور امین سمون کی 11 روزہ بچی شامل ہیں۔

آٹے کی جگہ مٹی


یاد رہے کہ مٹھی میں حکومت سندھ نے گندم کی بوریاں بھجوائی تھیں۔ لیکن ان بوریوں میں گندم نہیں بلکہ مٹی کی اطلاع ملی ۔بوریوں میں مٹی کی موجودگی کی اطلاع ملتے ہی ریلیف انسپکٹر جج میاں فیاض ربانی اور جو ڈیشل مجسٹریٹ نے گندم کے سرکاری گودام پر چھا پہ مارا۔

خیال رہے کہ تھر میں انتظامی غفلت کے باعث پیش نومولود بچوں کی ہلاکت پر قابوپانے کے عمل میں بہتری لانے کے لئے تھری عوام کے لئے پاک فوج نے سندھ کے صحرائی علاقے چھاچھرو میں جدید سہولیات سے آراستہ فری میڈیکل کیمپ کا انعقاد کیا گیا تھا.

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top