تھر کی تاریخ میں پہلی بار خواتین ڈرائیور -
The news is by your side.

Advertisement

تھر کی تاریخ میں پہلی بار خواتین ڈرائیور

تھر : تاریخ میں پہلی بار خواتین بھی ڈرائیونگ کرنے جارہی ہیں، خواتین کی ٹرینر تھری باسیوں کے جذبے پر حیران ہیں۔

تفصیلات کے مطابق گھر کام کاج ہو سلائی کڑھائی ہو یا ہو کھیتی باڑی کا کام تھر کی عورت حلال رزق کمانے میں اپنی مثال آپ ہے. مگر اب تھر کی خواتین ڈرائیونگ کے شعبے میں بھی اپنا لولہا منوائیں گی اور اب ڈمپر کی سواری کریں گی۔

اس سلسلے اینگرو کول مائننگ کمپنی تھر کو فیلڈ کی جانب سے 125 خواتین کی درخواستیں وصول ہوئیں جن میں سے ساٹھ خواتین کے انٹرویو کیے گئے جبکہ تیس خواتین کو ڈمپر کی ڈرائیونگ کے لیے سلیکٹ کیا گیا۔

ان خواتین کو پہلے مرحلے میں کار چلانے کی تربیت دی جائے گی جبکہ آخری مرحلے میں ساٹھ ٹن وزن اٹھانے والے ڈمپر کی ڈرائیونگ کی تربیت دی جائے گی، ایک سال کی تربیت کے بعد یہ خواتین اگلے مہینے سے باقاعدہ اپنے کام کا آغاز کریں گی۔

ٹریننگ کے اختتام پر یہ خواتین روزانہ آٹھ گھنٹے ڈمپر چلائیں گی، تیس خواتین کا انتخاب تھر میں کوئلے کی کانوں میں کھدائی کرنے کے بعد مٹی سے بھرے ڈمپر لے جانے کے لیے کیا گیا ہے، کڑی دھوپ میں ہیوی ڈمپرچلانے والی سخت جاں خواتین کے حوصلے بلند ہیں۔

خیال رہے کہ تھر میں کوئلے کے ذخائر کا شمار دنیا کے 16 بڑے ذخائر میں ہوتا ہے، نو ہزار کلو میٹر پر محیط یہ رقبہ کوئلے کے 175 ارب ٹن ذخائر سے مالامال ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں