The news is by your side.

سیلاب نے رواں سال برآمدات کے ہدف کا حصول بھی مشکل بنا دیا

سیلاب سے ملک کو شدید معاشی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جب کہ رواں سال برآمدات کا ہدف حاصل نہ ہونے کا بھی خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق پاکستان کی تاریخ کے بدترین سیلاب سے جہاں کروڑوں عوام بے سروساماں ہوگئی ہے وہیں معاشی مشکلات کا شکار ملک مزید بحران سے دوچار ہوتا نظر آرہا ہے۔

وزارت خزانہ کے ذرائع نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ سیلاب کے اثرات کے باعث رواں مالی سال برآمدات کا ہدف حاصل نہ ہونے کا خدشہ ہے اور اہم پیداواری شعبوں کی پروڈکشن میں کمی سے برآمدات میں کمی ہوسکتی ہے۔

جن شعبوں کی برآمدات میں نمایاں کمی واقع ہوسکتی ہے ان میں پھلوں، سبزیوں، تمباکو، سیمنٹ اور چمڑے کی مصنوعات شامل ہیں جب کہ اس کے ساتھ ہی رواں مالی سال گندم، دالیں، چینی، تعمیراتی مشینری اور ادویات کی درآمدات میں اضافہ ہوگا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ برآمدات میں کمی اور درآمدات میں اضافے کے باعث تجارتی خسارہ بڑھنے کا امکان ہے اور درآمدات بڑھنے کے باعث خسارہ 3 ارب ڈالر تک بڑھ سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: سیلاب ملکی معیشت کے اہداف کو لے ڈوبا

واضح رہے کہ سیلاب ملکی معیشت کے اہداف کو لے ڈوبا ہے اور وزارت خزانہ پہلے ہی یہ امکان ظاہر کرچکا ہے کہ سیلاب کے باعث رواں سال معاشی شرح نمو کا ہدف حاصل نہیں ہو سکے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں