پاناما جے آئی ٹی:‌ حکومت برداشت کا اعلیٰ‌ مظاہرہ کررہی ہے، مشاہد اللہ Mushaid Ullah
The news is by your side.

Advertisement

پاناما جے آئی ٹی:‌ حکومت برداشت کا اعلیٰ‌ مظاہرہ کررہی ہے، مشاہد اللہ

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کے سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا ہے کہ پاناما کیس کی جے آئی ٹی کے معاملے پر حکومت برداشت کا ایسا مظاہرہ کررہی ہے جس کی مثال نہیں ملتی، جو وزیراعظم کے بیٹے کونہیں چھوڑتےان پرکیادباؤ ڈالاجائے گا، یہ واحد جے آئی ٹی ہے جس میں پیش ہونیوالوں کے خلاف کوئی ایف آئی آر نہیں ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے لیگی سینیٹر نے کہا کہ حسین نواز کو جے آئی ٹی میں بیٹھا کر خبر دی گئی کہ اُن کی طبیعت خراب ہوگئی، 7 گھنٹے تک وزیر اعظم کو بیٹے کی طبیعت سے متعلق خبر نہیں دی گئی اور نہ ہی بے بنیاد خبر کی تردید کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ شریف خاندان کے ہاتھ صاف ہیں یہی وجہ ہے کہ مشرف کی14 ماہ کی کوشش ناکام ہوئی اور وہ کسی بھی مقدمے کا ثبوت فراہم کرنے میں ناکام رہے کچھ لوگوں کو دباؤ میں لاکر وعدہ معاف گواہ بنانے کی کوشش کی جارہی ہے مگر ایسا تب ہوتا ہے ہے جب کیس ثابت نہ کیاجاسکے اور کسی بھی شخص کو وعدہ معاف گواہ بنا کرپیش کردیا جائے۔

مشاہد اللہ کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کی سیاسی حیثیت ہوتی تو میدان میں مقابلہ کرتے، مخالفین کو گالیاں دینے والوں  کی خود آفشور کمپنیاں نکل آئیں اُن پر اگر جے آئی ٹی بنائی گئی تو سب پاناما جے ٓئی ٹی بھول جائیں گے۔ لیگی سینیٹر کا کہنا تھا کہ عمران خان نے جوالزامات لگائے انہیں ثابت کرنے کے لیے ادارے پوچھ گچھ کریں، تحریک انصاف کے چیئرمین اس ملک میں جمہوریت کی قبربنانے کی کوشش کی۔

سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ دنیا کاکوئی ایسا جرم ہے جو عمران خان نے نہ کیا ہو، انہوں  نے اپنی ہر تقریر میں اداروں کی تضحیک کی مگر اُن پر کوئی ایف آئی آر درج نہیں کی گئی، تحریک انصاف کے چیئرمین اب تک سیکڑوں لوگوں کو اپنے شعلہ بیانی کی وجہ سے جیل بھیج چکے ہیں۔

مسلم لیگ کے رہنماء نے کہا کہ نوازشریف کا خاندان وعدے کے مطابق تعاون کررہا ہے اور کچھ نہ ہونے کے باوجود بھی انہیں جے آئی ٹی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، ایسے وقت میں اپوزشین کی بے جا تنقید سمجھ سے بالاتر ہے ہونا تو چاہیے تھا کہ تمام سیاسی جماعتیں مل کر حکومت کے ہاتھ مضبوط کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں