The news is by your side.

Advertisement

اسرائیلی افواج کی جانب سے داغا گیا شیل نوجوان کے چہرے پر پھٹ گیا

غزہ : اسرائیلی مظالم کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر اسرائیلی افواج کی جانب سے داغہ گیا آنسو گیس کا شیل فلسطینی نوجوان کے چہرے پر پھٹ گیا، جس کے بعد نوجوان کا چہرہ خون میں لت پت ہوگیا اور منہ سے دھواں نکلنے لگا۔

تفصیلات کے مطابق سماجی سوشل میڈیا کی ویب سایٹز پر ایک تصویر وائرل ہوئی ہے جس میں ایک فلسطینی نوجوان کو اسرائیلی افواج کی جانب سے مارے گئے آنسو گیس کے شیل کو نوجوان کے چہرے پر پھٹتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق مذکورہ تصویر فلسطین کے خان یونس شہر کی ہے جہاں اپنے حقوق کی خاطر مظاہرہ کرنے والے فلسطینیوں پر اسرائیلی افواج نے ڈرون کے ذریعے آنسو گیس کے شیل برسائے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ چہرے پر شیل پھٹنے کے باعث 23 سالہ ہیثما ابو سبلہ نامی نوجوان زمین گرگیا اور اس کے منہ سے دھواں نکلنے لگا، جس کے بعد نوجوان کا چہر خون سے سرخ ہوگیا۔

اسرائیلی شیل سے زخمی ہونے والا نوجوان

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ اسرائیلی ظلم و بربریت کے خلاف مظاہرہ کرنے والے افراد اور طبی خدمات انجام دینے والے عملے نے نوجوان کو فوری طور پر غزہ کے اسپتال میں منتقل کیا۔

خبر رساں ادارے کے مطابق غزہ اسپتال کے ڈاکٹروں نے نوجوان کا آپریشن کرکے چہرے سے آنسو گیس کے شیل کے ٹکڑے نکالنے کے بعد انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں منتقل کردیا تھا۔

اسپتال ذرائع کا کہنا تھا کہ آپریشن کے بعد 23 سالہ ہیثم ابو سبلہ کی حالت پہلے سے بہتر ہے۔

خیال رہے کہ جمعۃ الوداع پوری دنیا میں یوم القدس کے عنوان سے منایا جاتا ہے، فلسطینی شہری جمعے کے روز غزہ اور اسرائیل کے درمیان لگی باڑ کے قریب مظاہرہ کررہے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ غاصب صیہونی ریاست اسرائیل کے خلاف مظاہرہ کرنے والوں پر اسرائیلی افواج نے اندھا دھند آنسو گیس کے شیل فائر کیے جس کے نتیجے میں 3 فلسطینی شہری شہید ہوگئے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں