The news is by your side.

Advertisement

محدود وسائل میں رہتے ہوئے انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا ہوگا، چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا ہے کہ ہمیں محدود وسائل میں رہتے ہوئے انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا ہوگا ،مقننہ نے اپنی بصیرت کے مطابق مسائل کے حل کے لیے اقدامات اٹھائے ہیں۔

چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کا صوبائی انصاف کمیٹیوں کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہمارا فوجداری نظام دہشتگردی، تشدداوربدعنوانی کے چیلنجزسے نبردآزماہے، شعبہ انصاف سے وابستہ لوگوں کودائرہ اختیار اور دستیاب وسائل میں ہی مسائل کا حل نکالناچاہیے۔

انہوں نے کہا کہ انتظامیہ بھی محدودوسائل کے اس قسم کی دردناک صورتحال سے نبردآزماہے ،انصاف کی فراہمی یقینی بناناہماری ذمہ داری ہے، تاہم بلاشبہ سزاوں کی کم شرح ہمارے سب کے لئے باعث تشویش ہے، اس نہ صرف اداروں کی انفرادی کارکردگی پر بلکہ پورے عدالتی نظام پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بات کی فکر کرنی چاہیئے کہ ضرر رسیدہ افراد کو انصاف کی فراہمی میں بظاہر ہماری ناکامی نظام انصاف پر عوامی اعتماد کو بری طرح متاثر کرہی ہے اور عوام انصاف کیلئے دیگر ذرائع تلاش کررہے ہیں اور ننتیجتاَ مروجہ نظام عدل بے ثمر ہوتا جارہا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا مقننہ نے اپنی بصیرت کے مطابق مسائل کے حل کے لیے اقدامات اٹھائے ہیں۔یہ بھی ضروری ہے کہ ہم اپنے اداروں کے خصوصاخدمات کی فراہمی کی سطح پر قائدانہ صلاحیت پیدا کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں