The news is by your side.

Advertisement

کافی شاپ مالکان کی عجیب حرکت کا انکشاف

ریاض: سعودی تاجر نے انکشاف کیا ہے کہ بعض کافی شاپس کے مالکان رش بڑھانے کے لیے لوگوں کو پیسے دیتے ہیں۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی نوجوان تاجر فہد المسلم نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ بعض کافی شاپس کے مالکان کی جانب سے رش بڑھانے کے لیے لوگوں کو پیسے دیتے ہوئے دھوکا دہی کا سہارا لیا جاتا ہے۔

نوجوان تاجر نے بتایا کہ ایسے کافی شاپس کے مالکان نوجوان کو پیسے دے کر بلاتے ہیں تاکہ وہ اپنے دوستوں کے ساتھ آئیں اور کافی شاپ میں رش لگائیں۔

فہد المسلم نے بتایا کہ ایسا کرنے سے عام افراد کو تصور دیا جاتا ہے کہ کافی شاپ میں بڑا رش ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ اس کی سروس اور پیش کی جانے والی چیزیں بہت معیاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھیڑ لگانے کے لیے بلائے جانے والے نوجوانوں کو 80 ریال سے 120 ریال تک دئیے جاتے ہیں۔

سعودی نوجوان نے کاروبار کرنے کے خواہشمند افراد کو مشورہ دیا کہ کافی شاپس کے علاوہ کسی اور کاروبار میں قسمت آزمائی کریں۔

اس کی وجہ بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہر شہر میں کافی شاپس اتنی تعداد میں کھل چکے ہیں کہ مزید کی گنجائش باقی نہیں رہی۔

فہد المسلم نے نوجوانوں کو مشورہ دیا کہ کوئی بھی کاروبار شروع کرنے سے پہلے اس کا تجربہ حاصل کرنا ضروری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں