The news is by your side.

Advertisement

ماضی کا کردار یوکرینی صدر کی زندگی کی حقیقت بن گیا

ولادیمیر زیلنسکی نے یوکرین کا صدر بننے سے قبل ایک ٹی وی ڈرامے میں ملک کے صدر کا کردار ادا کیا تھا جو کچھ سال بعد ان کی زندگی کی حقیقت بن گیا۔

بہت کم لوگ جانتے ہوں گے کہ یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی صدر بننے سے قبل اداکاری کے شعبے سے وابستہ تھے اور اس سے بھی کم لوگ جانتے ہوں گے کہ انہوں نے ایک ڈرامے میں ملک کے صدر کا کردار بھی ادا کیا تھا۔

کون جانتا تھا کہ 2015میں ریلیز ہونے والی ٹی وی سیریز سرونٹ آف پیپل میں صدر کا کردار نبھانے والے اداکار ولادیمیر ویلنسکی صرف 4   سال بعد 2019 میں حقیقت میں یوکرین کے صدر بن جائیں گے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ولادیمیر زیلنسکی نے سرونٹ آف دی پیپل میں ایک استاد ویزلی گولو بورو کا کردار نبھایا تھا جس میں وہ بطور استاد ملک میں کرپشن کے خلاف جذباتی تقریر کرتے ہیں جو اس ملک کے عوام کو اتنی پسند آتی ہے کہ وہ عوام کی حمایت سے ملک کی صدارت تک پہنچ جاتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق یوکرینی صدر نے اپنی جماعت کا نام بھی اسی ٹی وی پروگرام کے نام ’سرونٹ آف دی پیپل‘ پر رکھا اور انتخابی مہم کرپشن کے خاتمے اور ملک کے مشرقی حصے میں امن بحال کرنے کے نعرے پر چلائی۔

ولادیمیر زیلنسکی کی پیدائش یوکرین کے شہر کریویرخ میں یہودی خاندان میں ہوئی۔ زیلنسکی نے دارالحکومت کیف کی نیشنل اکنامکThe یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کی لیکن انہیں اداکاری میں دلچسپی تھی اور انہوں نے اسی شعبے کا انتخاب کیا۔

زیلنسکی نے 2003 میں اپنی ایک پروڈکشن کمپنی بنائی اور کامیڈی ٹیم کو کروٹل پچانوے کا نام دیا، 2010 میں ولادیمیر زیلنسکی کی ساری توجہ اپنے ٹی وی کیریئر پر ہی مرکوز رہی۔

2019 میں ہونیوالے صدارتی انتخابات میں ولادیمیر زیلنسکی نے اس وقت کے صدر پیٹروپورو شینکو کو ایک واضح مارجن سے شکست دی اور ملک کے حقیقی صدر منتخب ہوگئے۔

انہوں نے 73 فیصد ووٹ حاصل کرکے 20 مئی 2019 کو ملک کے چھٹے صدر کا حلف اٹھایا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں