The news is by your side.

Advertisement

نہر میں پھینکتے وقت معصوم بچوں نے کیا کہا تھا؟ سفاک باپ کا بیان

پتوکی: پنجاب کے ضلع قصور میں 5 کمسن بچوں کو نہر میں پھینکنے والے ابراہیم نامی سفاک باپ کا بیان سامنے آگیا جس میں اس نے بتایا کہ رشتے داروں کی طنزیہ باتوں نے یہ کام کرنے پر مجبور کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق اپنے بیان میں ملزم ابراہیم کا کہنا ہے کہ نہر میں دھکا دیتے وقت بچوں نے کچھ بھی نہیں کہا اور نہ ہی شور کیا اگر کرتے تو شاید ترس آجاتا اور یہ قدم نہ اٹھاتا، بیوی سے تلخ کلامی اور جھگڑے کی وجہ سے آپے سے باہر ہوگیا تھا، اس واقعے کے بعد میری حالت غیر سے ہوگئی ہے۔

درندہ صفت باپ نے کہا کہ بچوں سے پیار کرتا تھا، اب غم سے حالت خراب ہے۔

5 بچوں کو نہر میں پھینکنے والے ظالم باپ کے حوالے سے تہلکہ خیزانکشاف

اس کا مزید کہنا تھا کہ میرا اٹھنا بیٹھنا بھی مشکل ہوگیا ہے، نہر میں دھکا دیتے وقت بچوں نے شور نہیں کیا اگر کرتے تو شاید ترس آجاتا، بچوں کی یادستاتی ہے مجھ سے بڑا ظلم ہوا ہے۔

یاد رہے کہ دو روز پنجاب کے ضلع قصور کی تحصیل پتوکی میں سفاک باپ نے 5 بچوں کو نہر میں پھینک دیا تھا۔ اب تک 2 بچوں کی لاشیں نکالی گئی ہیں جبکہ دیگر کی تلاش جاری ہے۔

پولیس نے انکشاف کیا ہے کہ ملزم ریکارڈ کریمنل ہے، ابراہیم کے خلاف قصور میں 3 مقدمات درج ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں