The news is by your side.

Advertisement

ویب سائٹ پر گاڑی بیچنے والے شخص کے ساتھ افسوس ناک واقعہ پیش آیا

برمنگھم: برطانیہ میں ایک شخص کو اشتہارات کی ویب سائٹ پر گاڑی بیچنا نہایت مہنگا پڑ گیا، ٹیسٹ ڈرائیو لینے والا شخص گاڑی بھگا کر لے گیا۔

تفصیلات کے مطابق ویسٹ مڈلینڈز کے علاقے میں ایک چور نے ٹیسٹ ڈرائیو کے دوران گاڑی چرا لی، اور بعد میں گاڑی کے مالک کو ٹیکسٹ میسج بھیج کر 5 ہزار پاؤنڈ (تقریباً پچاس ہزار روپے) تاوان مانگا۔

چور نے گاڑی کے مالک کو ٹیکسٹ میسج کیا کہ اگر گاڑی واپس چاہیے تو 5 ہزار پاؤنڈ دے دو، میں گاڑی کی لوکیشن بتا دوں گا۔

اس سلسلے میں 27 سالہ جیک بیٹسن نے بتایا کہ انھوں نے 12 اپریل کو اشتہارات کی ویب سائٹ آٹو ٹریڈر پر اپنی کار KIA Rio کی فروخت کا اشتہار دیا، جس پر پیر کو اسے ایک شخص کا فون آیا اور پھر وہ پہنچ گیا، اس نے ٹیسٹ ڈرائیو کی بات کی جس پر میں نے بغیر کوئی اعتراض کار اس کے حوالے کر دی۔

جیک کا کہنا تھا کہ ٹیسٹ ڈرائیو کے بعد جب گاڑی رکی اور ہم باہر نکلے، گاڑی کا دروازہ بھی ابھی کھلا ہوا تھا، کہ اسی لمحے وہ شخص دوبارہ تیزی سے اندر بیٹھا، گاڑی اسٹارٹ کی اور اسے بھگا کر لے گیا۔

بیان کے مطابق چور نے بعد میں انھیں ٹیکسٹ میسجز بھیجے جس میں اس نے پیسوں کا مطالبہ کیا، اس نے لکھا ’کیا تم گاڑی واپس چاہتے ہو؟ تو پانچ سو پاؤنڈ دو اور میں تمھیں اس کی جگہ بتا دوں گا۔‘ جیک نے جواب دیا کہ بالکل نہیں، اگر تم نے گاڑی واپس نہ کی تو مقدمے کا سامنا کرو گے۔ چور نے اس پر ہنسنے کی علامت ٹائپ کر کے اس کا مذاق اڑایا۔

معلوم ہوا کہ مذکورہ چور اس سے قبل جیک کے دوست کی گاڑی بھی اڑا چکا ہے، دونوں نے ویسٹ مڈلینڈز کی پولیس کے پاس شکایت درج کرائی، تاہم گاڑی کی کمپنی کا کہنا ہے کہ چند روز بعد گاڑی تباہ شدہ حالت میں ایک مقام سے ملی، جس پر نمبر پلیٹ بھی جعلی لگی تھی۔

جیک نے پولیس کو بتایا کہ مجھے اس سے ڈرائیونگ لائسنس کا پوچھنا چاہیے تھا لیکن یہ بالکل غیر فطری محسوس ہوتا، چور ایشیائی لگتا تھا جس کی عمر 25 سے 35 کے درمیان تھی، اور اس نے سڈ کے نام سے اپنا تعارف کرایا تھا۔ جیک کا یہ بھی کہنا تھا کہ چور نے کرونا وبا کی وجہ سے سماجی فاصلے کی بھی بات کی اور پوچھا کہ 2 میٹر دور رہنا اچھا رہے گا؟ جس پر میں نے تائید کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں