The news is by your side.

Advertisement

متحدہ عرب امارات: ویکسین لگوانے والے شہریوں کو اضافی ڈوز دینے کا فیصلہ

ابو ظہبی: متحدہ عرب امارات کی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ جن افراد کو سائنو فارم کرونا ویکسین لگوائے 6 ماہ مکمل ہوچکے ہیں، انہیں فائزر ویکسین کی تیسری اضافی ڈوز لگائی جائے گی۔

بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات میں ڈاکٹروں نے کہا ہے کہ سائنو فارم ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوانے والے افراد کے لیے فائزر کی تیارکردہ ویکسین کی تیسری خوراک بالکل محفوظ ہے، اس سے انہیں کووڈ 19 کے خلاف تحفظ کی پرت کو مضبوط بنانے میں مدد ملے گی۔

اماراتی حکومت نے گزشتہ ہفتے سائنو فارم کی دونوں خوراکیں لگوانے والے افراد کو فائزر ویکسین کی تیسری اضافی خوراک لگانے کا اعلان کیا تھا، ہمسایہ خلیجی ریاست بحرین نے بھی اسی قسم کا اعلان کیا ہے۔

اماراتی ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ فائزرکی ویکسین کا اضافی انجیکشن آبادی کو کرونا وائرس کے مقابلے میں زیادہ سے زیادہ تحفظ مہیا کرنے کے لیے ملک کی فعال حکمت عملی کا حصہ ہے۔

شارجہ میں واقع برجیل اسپیشلٹی اسپتال میں داخلی میڈیسن کے ماہر ڈاکٹرراجیش کمار گپتا کا کہنا ہے کہ جن لوگوں کو سائنو فارم کی ویکسین کا دوسرا انجیکشن لگے 6 ماہ مکمل ہوچکے ہیں، انہیں اب تیسری اضافی تقویتی خوراک لگائی جائے گی۔

ان کے مطابق اس کا مقصد لوگوں کی قوت مدافعت میں اضافہ کرنا ہے، اگر لوگ فائزر کی تیسری خوراک لگواتے ہیں تو یہ ان کے لیے بالکل محفوظ ہے۔

ڈاکٹرگپتا نے واضح کیا کہ کووِڈ 19 کے اینٹی باڈی ٹیسٹ کروانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، اس ٹیسٹ سے اس بات کا تعین کیا جاسکتا ہے کہ کیا جسم میں کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے قوت مدافعت موجود ہے اور پھر ویکسین کی تیسری اضافی خوراک لگوائی جاسکتی ہے مگر یہ ٹیسٹ کروانے کی ہرگز ضرورت نہیں۔

ایم بی زیڈ سٹی میں واقع برین انٹرنیشنل اسپتال میں داخلی میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر عظیم عبد السلام محمد نے بھی ان کے مؤقف کی تائید کی ہے اور کہا ہے کہ کسی بھی ویکسین کی تیسری خوراک لی جا سکتی ہے اور یہ بالکل محفوظ ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں