قائد ایم کیو ایم کی متنازعہ تقریر، مختلف تھانوں میں 3 مقدمات درج -
The news is by your side.

Advertisement

قائد ایم کیو ایم کی متنازعہ تقریر، مختلف تھانوں میں 3 مقدمات درج

کراچی : ایم کیو ایم کے قائد کی پاکستان کے حوالے سے متنازعہ تقریر کے بعد شہری کی جانب سے کراچی کے علاقے ملیر سٹی تھانے کی حدود میں دوسرا مقدمہ درج کروا دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ملیر سٹی تھانے کی حدود میں شہری وحید مراد کی درخواست پر درج کیا گیا ہے، شہری کی جانب سے دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ قائد ایم کیو ایم کی ملک دشمنی پر مبنی تقریر کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت مقدمہ درج کیا جائے۔

جس کے بعد ایس ایس پی ملیر راؤ انور نے مقدمے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ’’شہری کی درخواست پر  قائد ایم کیو ایم اور متحدہ کی قیادت کے خلاف تھانہ ملیر سٹی میں منگل کے روز مقدمہ درج کیا گیاہے۔ مقدمہ میں انسداد دہشت گردی، ٹیلی گرافک ایکٹ اور غداری کی دفعات کو شامل کیا گیا ہے۔

پڑھیں:    وفاقی حکومت کا ملک بھر میں ایم کیوایم کے دفاتر بند

علاوہ ازیں گزشتہ روز کراچی پریس کلب کے باہر پاکستان سے متعلق متنازعہ تقریر کے بعد متحدہ قائد اور قیادت کے خلاف پہلا مقدمہ سائٹ تھانے میں شہری کی درخواست پر درج کیا گیا ہے۔

دوسری جانب کراچی پریس کلب کے باہرہنگامہ آرائی اور اے آر وائی نیوز سمیت میڈیا پر حملے، ایم کیو ایم رہنماؤں سمیت ڈیڑھ ہزار نامعلوم افراد پر آرٹلری میدان تھانے میں ایس ایچ او کی مدعیت میں بھی مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں:   متحدہ کے خلاف کریک ڈائون، کراچی اور حیدر آباد میں دفاتر سیل،گرفتاریاں

ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات سمیت ٹیلی گراف ایکٹ کی دفعات بھی شامل کی گئی ہیں اور  ملزمان میں ڈاکٹر فاروق ستار، کنور نوید جمیل، شاہد پاشا، قمر منصور ، عامر خان، گلفراز خٹک، عبدالقادر خانزادہ، محمد جاوید کاظم، عاطف خان کے نام شامل ہیں جبکہ خواتین سمیت 1500 کارکنان کو بھی نامزد کیا گیا ہے۔

کراچی پریس کلب پر ہنگامہ آرائی اور میڈیا ہاؤسز پر حملوں کا مقدمہ دہشت گردی دفعات کےتحت درج کرلیا گیا۔ ایف آئی آرز میں فاروق ستار ودیگر رہنماؤں سمیت ڈیڑھ ہزارنامعلوم افرادکو نامزدکیا گیا ہے۔

یاد رہے گزشتہ روز کراچی پریس کلب پر ایم کیوایم قائد کی اشتعال انگیز تقریرکے بعد مسلح کارکنان نے اے آر وائی کے بیورو آفس پر حملہ کیا اور دفتری املاک کو بھی نقصان پہنچایا تاہم ہنگامہ آرائی کرنے والے افراد نے فوارہ چوک پر کھڑی دو موٹر سائیکلوں اور پولیس موبائل کو بھی آگ لگا دی تھی۔

 

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں