The news is by your side.

Advertisement

پاناما جےآئی ٹی: تیسری پیشرفت رپورٹ آج سپریم کورٹ میں پیش کی جائےگی

اسلام آباد : پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی تیسری پیشرفت رپورٹ آج سپریم کورٹ میں جمع کرائے گی۔

تفصیلات کےمطابق پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم آج تحقیقات میں پیش رفت کے حوالے سے اپنی تیسری رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کرے گی۔

جے آئی ٹی کی جانب سے آج عدالت عظمیٰ میں جمع کرائی جانے والی رپورٹ میں وزیراعظم نوازشریف،ان کے بیٹوں اور وزیراعلٰی پنجاب کی پیشیوں سےمتعلق سپریم کورٹ کو آگاہ کیا جائے گا۔

تحقیقات کےتیسرے دور میں بڑی پیشیاں ہوئیں۔بیٹوں کے بعد خود وزیراعظم پاکستان کو بھی جوڈیشل اکیڈمی میں تین گھنٹے تک پیشی کا سامنا کرنا پڑا جبکہ وزیراعظم کے چھوٹے بھائی شہبازشریف سے بھی تین گھنٹے سے زائد پوچھ گچھ ہوئی۔

ذرائع کے مطابق پندرہ جون کو وزیراعظم نوازشریف سے منی ٹریل اور کاروبار سے متعلق تین گھنٹے تک کیا کیا سوالات کئے اور کیا جواب ملے، جےآئی ٹی خصوصی طور پرمندرجات کو تفصیل کے ساتھ رپورٹ میں شامل کررہی ہے۔


مزید پڑھیں :  وزیراعظم نوازشریف پاناما جے آئی ٹی کے سامنے پیش


ذرائع کے مطابق جےآئی ٹی آج جمع کرائی جانے والی رپورٹ میں پاناماعملدرآمد بینچ کو تحقیقات کے چوتھے اور آخری سیشن کی حکمت عملی سے بھی آگاہ کرے گی کہ قطری شہزادے کے خط پر پیشرفت کو کیسے آگے بڑھانا ہے؟وزیراعظم کے سمدھی، وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو طلب کرنا ہے یا نہیں ؟ نوازشریف کے داماد کیپٹن صفدر کا شریف خاندان کے کاروبار سے کیا لینا دینا ہے؟


مزید پڑھیں : شہباز شریف کی پانامہ جے آئی ٹی میں پیشی


دوسری جانب جے آئی ٹی میں سینیٹر رحمان ملک 23 جون کو پیش ہوکر اپنا بیان بھی ریکارڈ کرائیں گے جبکہ وزیر اعظم کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو 24 جون کو طلب کر رکھا ہے۔

کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے گزشتہ ہفتے جے آئی ٹی سے ان کی طلبی کی تاریخ میں تبدیلی کی درخواست کی تھی اور موقف اختیار کیا تھا کہ رواں ہفتے انہیں عمرہ ادائیگی کےلیے سعودی عرب جانا ہے اس لیے طلبی کی تاریخ تبدیل کی جائے تاہم جے آئی ٹی نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی استدعا مسترد کردی۔

خیال رہے کہ جے آئی ٹی پاناما کیس سے متعلق اپنی 2 رپورٹیں سپریم کورٹ میں جمع کرا چکی ہے،اس سے پہلے جے آئی ٹی کی جانب سے 7 جون کو دوسری رپورٹ جمع کرائی گئی تھی۔

سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ کاگذشتہ سماعت میں کہنا تھا کہ تحقیقات درست سمت میں جا رہی ہے اور یہ کہ جے آئی ٹی کے لیے مقررہ 60 دن کی مدت پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔

یاد رہے کہ 7جولائی کو جے آئی ٹی کے 60 روز مکمل ہو جائیں گے جس کے بعد جے آئی ٹی اپنی تحقیقاتی رپورٹ سفارشات کے ساتھ سپریم کورٹ میں جمع کرائے گی ۔

واضح رہے کہ سپریم كورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ 20 اپریل کو سناتے ہوئے معاملے كی مزید تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے کا حکم دیا تھا اور اس ٹیم کی تشکیل کے لیے 6 اداروں سے نام طلب کیے تھے۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں