The news is by your side.

Advertisement

‘دھمکی آمیز خط حقیقت ہے یا نہیں، دو صورتیں ہو سکتی ہیں’

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ وزیراعظم کو ملنے والا دھمکی آمیز خط شیئر کر کے ہم سیاست بھی کر سکتے ہیں لیکن ایسا نہیں کر رہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے فوادچوہدری نے کہا کہ وزیراعظم کو ملنے والا دھمکی آمیز خط حقیقت ہے یا نہیں اس سے متعلق دو صورتیں ہوسکتی ہیں ایک صورت کہ خط کو شیئر کر دیں تاکہ یقین آجائےحقیقت ہے دوسری صورت کہ خط کےمندرجات سامنےآجائیں اورحقیقت کاپتہ چلے۔

انہوں نے کہا کہ خط شیئر کر کے ہم سیاست بھی کر سکتے ہیں لیکن ایسا نہیں کر رہے خط شیئر کرنے سے سیاسی طور پر فائدہ ہو گا لیکن خارجہ پالیسی متاثر ہو گی۔

فوادچوہدری نے کہا کہ خط جس کی جانب سے بھیجا گیا ان کا نام سامنے نہیں لاناچاہتے آئین ہمیں ملکی مفاد متاثر کرنے والی چیزیں بتانے سے روکتا ہے خط ملک کی طرف سے آیا ہے یا ملکوں کی طرف سےبعدکی باتیں ہیں خط پر دستخط اور کس لیول کے افسر نے بھیجا، وزارت خارجہ کیسے بھیجا بعد کی باتیں ہیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ خط کے مندرجات چند اعلیٰ سول اور ملٹری لیڈرشپ کے ساتھ شیئر کر لیے ہیں خط کے معاملےکو قومی سلامتی کمیٹی میں بھی لےجایا جا سکتا ہے لیکن خط کےمندرجات ایسےہیں جوزیادہ لوگوں سے شیئر نہیں کیے جا سکتے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں