site
stats
پاکستان

امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن کل پاکستان آئیں گے

اسلام آباد : پاک امریکا تعلقات میں اہم موڑ پر امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن کل پاکستان آئیں گے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن ایک روزہ دورے پر کل پاکستان پہنچیں گے اور سیاسی وعسکری قیادت سے ملاقاتیں کریں گے، ایک روزہ دورے میں امریکی وزیرخارجہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، وزیرخارجہ خواجہ آصف اورآرمی چیف جنرل قمرجاوید باوجوہ سے ملاقات کریں گے، جس میں باہمی تعلقات،افغانستان میں امن اوراہم علاقائی اورعالمی امورپرتبادلہ خیال کریں گے۔

دورہ پاکستان کےایجنڈے میں پاک امریکا تعلقات،افغانستان میں قیام امن، خطرہ  بننے والے دہشتگردگروپوں کیخلاف مشترکہ ایکشن اور خطے میں سلامتی کے امور زیر غور آئیں گے، ،امریکی خارجہ کا پاکستانی حکام سے ملاقاتوں کا شیڈول طے کیا گیا ہے۔

دوسری جانب ریاض میں پریس کانفرنس میں ریکس ٹلرسن کا کہنا تھا کہ سعودی عرب قطربحران پربات کرنے پر تیار نہیں، قطر پر پابندیوں کے حوالے سے کسی بریک تھرو کا امکان کم ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب،یواے ای، مصر اوربحرین نے جون میں قطر پر سفری اورتجارتی پابندیاں عائد کی تھیں۔

خیال رہے کہ امریکی وزیرخارجہ کوخواجہ آصف نےچودہ اگست اورچاراکتوبر کودورہ کی دعوت دی تھی جبکہ امریکی وزیردفاع جیمز میٹس دسمبر میں پاکستان آئیں گے۔

یاد رہے کہ امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن نے مغوی خاندان کی بازیابی پر حکومت پاکستان اور پاک فوج کی تعریف کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکہ پاکستان کی حکومت اورفوج کی طرف سے تعاون پربھی ان کا دل کی گہرائی سے شکرگزارہے۔


مزید پڑھیں : افغانستان میں قیام امن کے لیے پاکستان کا کردار اہم ہے ، ریکس


اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن اپنے بیان میں کہنا تھا کہ افغانستان میں قیام امن کے لیے پاکستان کا کردار اہم ہے، پاک بھارت کشیدگی خطے کے مفاد میں نہیں، مستحکم افغانستان میں سب سے زیادہ فائدہ پاکستان کا ہے، طالبان کے لیے واضح پیغام ہے امریکا افغانستان سے کہیں نہیں جارہا۔

ریکس ٹلرسن کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کی سرحدوں پر اس وقت شدید کشیدگی ہے، پاک بھارت کشیدگی خطے کے مفاد میں نہیں، پاک بھارت سرحد کشیدگی کا خاتمہ چاہتے ہیں، امید ہے پاکستان دہشت گردوں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی کرے گا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top