The news is by your side.

Advertisement

جیسے کو تیسا؛ روس کا امریکا کو کرارا جواب

جیسے کو تیسا کے مصداق روس نے امریکا کے 10 سفارت کاروں کو ملک چھوڑنے کا حکم دے دیا۔

روسی میڈیا کے مطابق ماسکو میں امریکی سفارتخانے کے ڈپٹی چیف آف مشن بارٹ گورمین ‏سمیت 10 سفارتی اہلکاروں کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دیا گیا ہے۔

روس نے ناپسندیدہ قرار دیے گئے افراد کو ایک ماہ کے اندر ملک چھوڑنے کے احکامات جاری کیے ‏ہیں۔ امریکی سفارتی عملے کو ہدایت کی گئی ہے کہ 21 مئی تک ماسکو سے نکل جائیں۔

روس کی جانب سے یہ اقدام واشنگٹن میں روسی سفارتخانے اور نیویارک میں روسی قونصل جنرل ‏کے متعدد ملازمین کو نکالے جانے کے ردعمل میں کیا گیا ہے۔

امریکا نے روس پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کرتے ہوئے 10 سفارتکاروں کو ملک بدر کرنے کا حکم ‏‏دیا تھا۔
امریکی انتخابات میں مداخلت، ہیکنگ اور کریمیا پر ‏غیرقانونی تسلط کے الزامات پر امریکا نے ‏روس پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کیں۔

امریکی صدر جوبائیڈن نے روس پر پابندیوں کے ایگزیکٹوآرڈر پر دستخط کیے۔ صدارتی احکامات ‏کے مطابق روس پر مختلف نوعیت کی اقتصادی پابندیاں عائد کی گئی ہیں جب ‏کہ 10ڈپلومیٹس کو ‏ملک بدر ی کا حکم دیا گیا۔

گذشتہ سال کے صدارتی انتخابات میں مداخلت اور وفاقی ایجنسیوں کی ہیکنگ کے لئے کریملن کو ‏‏جوابدہ قصوروار ٹھہرایا گیا ہے۔

بائیڈن انتظامیہ نے جمعرات کے روز 10 روسی سفارت کاروں کو ملک بدری اور لگ بھگ تین درجن ‏‏افراد اور کمپنیوں کے خلاف پابندیوں کا اعلان کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں