The news is by your side.

ٹائٹینک کے مسافر کی گھڑی کتنے میں فروخت ہوئی؟ جان کر حیران رہ جائیں

ٹائٹینک جو 110 سال قبل اپنے پہلے بحری سفر پر ہی سمندر میں غرق ہوگیا تھا اس کے ایک مسافر کی گھڑی 98 ہزار برطانوی پاؤنڈ میں فروخت ہوئی ہے۔

ٹائٹینک اپنے دور کا پرتعیش لیکن بدقسمت بحری جہاز تھا۔ جس کے مالک نے دعویٰ کیا تھا کہ یہ جہاز کبھی نہیں ڈوبے گا لیکن 110 سال قبل یہ اپنے پہلے ہی سفر میں سمندر میں غرق ہوگیا اور اپنے ساتھ سینکڑوں مسافروں کو بھی لے ڈوبا۔

اس بدقسمت بحری جہاز کی صرف ایک خاتون مسافر ہی زندہ بچ پائی تھی جو چند سال قبل انتقال کرچکی ہے۔ اس حادثے پر کئی فلمیں بھی بنیں۔ داستانیں پھیلیں اور اب تک اس حوالے سے کچھ نہ کچھ دریافت اور دنیا کے سامنے آتا رہتا ہے۔

حال ہی میں ٹائٹینک کے غرق ہونے کے 110 سال بعد اس میں سفر کرنے والے ایک کلرک کی جیبی گھڑی 98 ہزار پاؤنڈز ( پاکستانی لگ بھگ 2 کروڑ 75 لاکھ روپے) میں فروخت کی گئی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بحری جہاز ٹائٹینک جب 14 اپریل 1912 میں بحر اوقیانوس میں غرق ہوا تو کلرک آسکر اسکاٹ ووڈی کی گھڑی پانی میں ڈوب کر جم گئی تھی۔ بعد ازاں گھڑی سمندر میں ٹائٹینک کے ملنے سے ملی تھی جس کو بعد ازاں اسے آسکر کی اہلیہ حوالے کردیا گیا تھا۔

گزشتہ دنوں ٹائٹینک سے برآمد ہونے والی اس تاریخی گھڑی کو برطانیہ کے ایک نیلام گھر کے ذریعے 98 ہزارپاؤنڈز ( پاکستانی لگ بھگ 2 کروڑ 75 لاکھ روپے) میں فروخت کردیا گیا۔

صرف گھڑی ہی نہیں ٹائٹینک کی دیگر اشیا میں فرسٹ کلاس کا مینیو 50 ہزار برطانوی پاؤنڈز اورجہاز میں سفر کرنے والے امیر مسافروں کی فہرست 41 ہزار پاؤنڈزمیں فروخت کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں