site
stats
پاکستان

آج ممتازشاعراورجریدہ “نقش” کےمدیرشمس زبیری کی17 ویں برسی ہے

ممتاز شاعر،معروف ادبی صحافی،”کاشانہ اردو” کے والی وارث اور بچوں کے ادبی رسالے “میرا رسالہ” اور ادبی جرائد کے انتخاب پر مشتمل رسالہ “نقش” کے خالق و مدیر شمس زبیری کو اس دار فانی کوچ کیے ہوئے 17 سال ہو گئے ہیں لیکن وہ آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں میں جیتے ہیں۔

شمس زبیری 1917ء میں پیدا ہوئے اور بعد ازقیام پاکستان ریڈیو سے وابستگی اختیار کی اور مصلح زبان کے فرائض انجام دیتے رہے اسی دوران انہوں نے ایک ادبی جریدہ نقش جاری کیا جو اپنے زمانے کا ایک بڑا مقبول ادبی جریدہ تھا۔

جریدہ “نقش” دیگر ادبی رسائل میں چھپنے والی مقبول ترین اوربہترین اصناف ادب کاانتخاب یکجا کرکے پیش کرتا تھا اوریوں اس کے ذریعہ قاری کو ایک ہی جریدے کے ذریعے تمام ادبی جریدوں میں شائع ہونے والا بہترین ادب ایک ہی جگہ پڑھنے کو مل جاتا تھا۔

اکبر روڈ پر واقع شمس زبیری کے ادارے ’’کاشانۂ اردو‘‘ سے بچوں کا پرچہ ’’میرا رسالہ‘‘ اور ادبی جراید کے انتخاب پر مبنی ’’نقش‘‘ نکلا کرتا تھا۔

معروف ادبی شخصیت عبیداللہ بیگ صاحب بھی شمس زبیری کے زیر صدارت و ادارت شائع ہونے والے بچوں کے رسالے ” میرا رسالہ ” میں حبیب اللہ بیگ کے نام سے لکھا کرتے تھے۔

3 ستمبر 1999ء کو ممتاز شاعر اور صحافی شمس زبیری قادر آباد حجرہ شاہ مقیم اوکاڑہ میں وفات پاگئے اور وہیں آسودۂ خاک ہوئے۔

منتخب کلام

کبھی آتشِ غمِ عشق تھی کبھی آتشِ غمِ زندگی
مرے دل میں آگ لگی رہی کٹی عمر سوز و گداز میں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سودا وہ سما گیا ہے سر میں جچتا ہی نہیں کوئی نظر میں
پہچان رہا ہوں دشمنوں کو کچھ دوست بھی ہیں مری نظر میں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہم اور ڈریں بادِ مخالف سے غلط ہے

ہم گردشِ دوراں سے کئی بار لڑے ہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

شمس زبیری کی غزلوں میں سے ایک شاہکار غزل 

کچھ اس طرح وہ نگاہیں چراۓ جاتے ہیں
کہ اور بھی مرے نزدیک آۓ جاتے ہیں
اس التفات گریزاں کو نام کیا دیجیے
جواب دیتے نہیں مسکراۓ جاتے ہیں
نگاہ لطف سے دیکھو نہ اہل دل کی طرف
دلوں کے راز زبانوں پہ آۓ جاتے ہیں
وہ جن سے ترک تعلق کو اک زمانہ ہوا
نہ جانے آج وہ کیوں یاد آۓ جاتے ہیں
تمہاری بزم کی کچھ اور بات ہے ورنہ
ہم ایسے لوگ کہیں بن بلاۓ جاتے ہیں
یہ دل کے زخم بھی کتنے عجیب ہیں اے شمسؔ
بہار ہو کہ خزاں مسکراۓ جاتے ہیں

 

بہ شکریہ ۔۔ خالد محمود صاحب

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top