The news is by your side.

Advertisement

توشہ خانہ ریفرنس، نواز شریف اشتہاری قرار ، یوسف رضاگیلانی اورآصف زرداری پرفردِجرم عائد

اسلام آباد : احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کو اشتہاری قرار دے دیا اور یوسف رضا گیلانی اورآصف زرداری پرفردجرم عائدکردی تاہم ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں جج سید اصغر علی نے توشہ خانہ ریفرنس پر سماعت کی ، آصف علی زرداری اوریوسف رضا گیلانی بطورملزم عدالت میں پیش ہوئے۔

نوازشریف سے متعلق توشہ خانہ ریفرنس میں نیب رپورٹ سامنے آئی ، جس میں بتایا گیا بذریعہ اشتہارطلبی چیلنج کرنا ثبوت تھانوازشریف کارروائی سےآگاہ ہیں، نوازشریف نےکیس میں سوالنامےکاجواب بھی نہیں دیا۔

نیب رپورٹ میں کہا گیا کہ 5جولائی2019 کوکوٹ لکھپت جیل میں نوازشریف سےزبانی تفتیش کی گئی، نوازشریف نےوکیل سےمشاورت کرکےجواب کاوقت مانگاتوسوالنامہ دیاگیا، سوالنامے کا جواب پھر مانگا مگر نواز شریف مشاورت نہ ہونے کا بہانہ بناتےرہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا نوازشریف کوعدالت حاضرکرنےکی ہرممکن کوشش کی، نواز شریف اشتہار جاری ہونے کےبعد جان بوجھ کرفرارہیں۔

احتساب عدالت نےتوشہ خانہ ریفرنس میں نواز شریف کواشتہاری قرار دے دیا، جج نے فاروق ایچ نائیک سے مکالمے میں کہا پہلے نواز شریف کا کیس الگ کریں گے پھر دیگر پرفردجرم عائد کریں گے، آپ نےچارج شیٹ پڑھنی ہے تو پڑھ لیں۔

سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی خودروسٹرم پر آئے اور کہا میں نے کبھی رولز کیخلاف کوئی کام نہیں کیا، قانون کے مطابق جو سمری آئی اسے منظورکیا، سمری غلط ہوتی تو سمری موو ہی نہ ہوتی۔

جج سید اصغر علی نے کہا ہم ابھی میرٹس پر بات نہیں کر رہے کہ سمری کیسےآئی اورمنظور ہوئی اور یوسف رضا گیلانی کو ہدایت کی کہ یہ بات تو ٹرائل کے دوران بتائیں، جس پر یوسف رضا گیلانی کا کہنا تھا کہ نیب نے رولز آف بزنس کو دیکھے بغیر ریفرنس بنایا۔

عدالت نے یوسف رضاگیلانی اورآصف زرداری پرفردجرم عائدکردی ، جج احتساب عدالت نے استفسار کیا کیا ملزمان صحت جرم سےانکار کر رہے ہیں؟ جس پر ملزمان کا عدالت میں صحت جرم سے انکار کیا۔

وکیل صفائی نے کہا کہ وزیراعظم کے پاس اختیار ہےکہ سمری کی منظوری دے، نیب نےاختیارات کےغلط استعمال کاغلط ریفرنس بنایا۔

جج احتساب عدالت نے نواز شریف کو اشتہاری قرار دے کر کیس الگ کردیا اور نوازشریف کی منقولہ،غیر منقولہ جائیدادکی تفصیلات مانگتے ہوئے کہا کہ 7 دن میں نواز شریف کی جائیداد کی تفصیلات پیش کی جائیں۔

احتساب عدالت نےنوازشریف کےدائمی وارنٹ گرفتاری جاری کردیے جبکہ آصف زرداری،یوسف رضاگیلانی سمیت4ملزمان پرفردجرم عائد کی۔

سابق صدر آصف زرداری نے شورٹی بانڈ پر دستخط کر دیے جبکہ عدالت نے آئندہ سماعت پر 3 گواہان کو طلب کر لیا ، گواہان میں وقار الحسن شاہ، زبیر صدیقی، عمران ظفر شامل ہیں۔

بعد ازاں احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت24ستمبرتک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں