The news is by your side.

Advertisement

بھارت سے تجارت کی تو یہ کشمیریوں سے غداری ہوگی، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کے خون پر پاکستان کی تجارت بہتر کرنے کا نہیں سوچ سکتے، بھارت سے تجارت کی تو لاکھوں کشمیری کا خون رائیگاں جائیگا۔

تفصیلات کے مطابق “آپ کا وزیراعظم آپ کے ساتھ” کی براہ راست نشریات میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ اگرہم بھارت سے تجارت کرینگے تو یہ کشمیریوں سے غداری ہوگی، بھارت سے تجارت کی تو لاکھوں کشمیری کاخون رائیگاں جائیگا، کشمیریوں کے خون پر پاکستان کی تجارت بہتر کرنے کانہیں سوچ سکتے۔

وزیراعظم نے کہا کہ بھارت کیساتھ ہمارا ایک ہی مسئلہ ہے وہ کشمیر کا ہے، اقتدار میں آکر پوری کوشش کی کہ بھارت سے تعلقات اچھے ہوں، بھارت پانچ اگست کا فیصلہ واپس لےتوبات چیت ہوسکتی ہے۔

مشرق وسطیٰ کی صورت حال پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اسرائیل نے فلسطین میں بھی زمینوں پر قبضہ کیاہواہے، فلسطین تھوڑا سا رہ گیا ہے باقی علاقوں پر ان لوگوں نے قبضہ کرکےاپنے لوگ بٹھادیئے، اسرائیلی کب تک فلسطینیوں کو خوف سے ڈراتے رہیں گے یہ ظلم کا نظام ہے، سب کو معلوم ہے ظلم کا نظام نہیں چل سکتا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مغربی ممالک میں لوگ پہلے فلسطین کے حق میں بات نہیں کرتےتھے، اب امریکا میں بھی لوگ سوشل میڈیا پر کہہ رہےہیں کہ فلسطینیوں پر ظلم ہورہاہے، اب ایک تحریک چل پڑی ہے اب فلسطین کے مسئلے کے حل کی طرف بڑھیں گے۔

اپوزیشن پر کڑی تنقید

وزیراعظم نے عوام سے براہ راست مخاطب ہوتے ہوئے اپوزیشن کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ اپوزیشن فوج کو کہتی ہے کہ منتخب حکومت کو گرادو، پہلے دن سے انہوں نے کہا کہ نااہل ہیں نکال دیناچاہیے، اپوزیشن نےساتھ ساتھ یہ کہا کہ این آر او دیں تو آپ نااہل نہیں ہونگے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اپوزیشن اورپی ڈی ایم اکٹھی ہورہی ہےپھر جارہی ہے پھر آرہی ہے، اپوزیشن اور پی ڈی ایم کا جو مقصد ہے وہ کبھی پورا نہیں ہوسکتا،ان کا مقصد ذات کا ہے یہ نظریئے یا ملک کیلئے نہیں اکٹھے نہیں ہوئے، یہ چاہتے ہیں کہ بلیک میل کرکے کرپشن کے مقدمات ختم کرادیں، جو سائیکلوں پر تھے آج لینڈ کروزر پر آگئے ہیں، جن کی سائیکل کی دکانیں تھیں انکی لندن میں جائیداد رولزرائس گاڑیاں ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہمیں مشکل وقت میں حکومت ملی،کبھی کسی کو اتنےمسئلے مسائل نہیں ملے جتنے ہمیں ملے، خساروں کیساتھ قرضوں کا بوجھ برداشت کرناپڑرہاہے، عوام کو ایک مشکل وقت سے گزرنا تھا، اللہ نے ہمیں مشکل وقت سے گزارا ہے انشااللہ آگے مزید آگے بڑھتے دیکھیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں