The news is by your side.

Advertisement

اغوا و زیادتی کا جھوٹا دعویٰ کرنے والی طالبہ نے خودکشی کرلی

حیدر آباد: بھارتی شہر حیدر آباد میں ایک طالبہ کو اغوا اور اجتماعی زیادتی کا ڈراما کرنے پر افسوس ناک انجام سے دوچار ہونا پڑ گیا۔

تفصیلات کے مطابق حیدر آباد میں دو ہفتے قبل 19 سالہ ایک لڑکی نے ماں کی ڈانٹ سے بچنے کے لیے اغوا اور جنسی زیادتی کا ڈراما رچایا تھا، تاہم سچ سامنے آنے کے بعد اس نے خود کشی کر لی۔

بتایا جا رہا ہے کہ بی فارمیسی کی سال دوم کی طالبہ نے رشتہ داروں اور سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر کی جانے والی تنقید کی وجہ سے خود کشی کی۔

یہ واقعہ رواں ماہ کی 10 تاریخ کو پیش آیا تھا جب گھٹکیسر کے علاقے میں ایک طالبہ دوست کے ساتھ رات دیر تک رہی، تاہم واپسی پر ماں کی ڈانٹ سے بچنے کے لیے اس نے اغوا کی جھوٹی کہانی بنا لی۔

لڑکی نے ماں کو بتایا کہ اسے آٹو ڈرائیور نے اغوا کیا اور لے جا کر اجتماعی جنسی زیادتی کا شکار بنایا، تاہم ماں نے فوری طور پر پولیس کو رپورٹ کیا، جس پر پولیس نے ایکشن لیتے ہوئے لڑکی کو اسپتال داخل کیا اور کئی مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا۔

اپنے بیان میں لڑکی نے پولیس اور میڈیا کو بھی گم راہ کیا، لیکن پولیس کی سائنٹفک تفتیش میں اس کا جھوٹ کھل گیا، اور اس نے اعتراف کر لیا کہ وہ اپنے دوست کے ساتھ گئی تھی اور گھر آنے میں تاخیر پر ماں کی ڈانٹ سے بچنے کے لیے جھوٹی کہانی بنائی۔

واقعے کے بعد سے طالبہ اپنی دادی کے گھر مقیم تھی، جہاں اس نے منگل کی رات گھر میں موجود دادی کی شوگر کی گولیاں بڑی مقدار میں کھا لیں، طبیعت خراب ہونے پر اسے اسپتال منتقل کیاگیا لیکن وہ جاں بر نہ ہو سکی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں