The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں کورونا مریض کی لاش کے ساتھ دلخراش واقعہ

بھارت میں اسپتالوں کے مردہ خانے بھر گئے، کورونا سے ہلاک افراد کی لاشیں منتقل کرنا اور آخری ‏رسومات کی ادائیگی کے دلخراش واقعات بڑھتے جارہے ہیں۔

ایک جانب مہاراشٹر میں ایک ایمبولینس میں 22 لاشیں لے جانے پر لوگوں میں شدید غم و غصہ پایا ‏جاتا ہے تو دوسری جانب کولکتا میں ایمبولینس ڈرائیور کورونا مریض کی لاش سڑک پر رکھ کر فرار ‏ہوگیا۔

ایک ارب 30 کروڑ آبادی کے ملک میں کورونا کی وبا تیزی سے پھیل رہی ہے۔ دارالحکومت دہلی ‏میں صورت حال انتہائی ابتر ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق نئی دہلی کے سر گنگا رام ہسپتال کے ایک ترجمان کا کہنا تھا ‏کہ اس وقت ہسپتال میں شدید بحران کی صورت حال ہے۔

وزیراعظم نریندر مودی نے تمام شہریوں پر ویکسین لگوانے اور احتیاط برتنے پر زور دیا ہے جبکہ ‏ہسپتالوں اور ڈاکٹروں نے نوٹس دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ مریضوں کی بڑی تعداد سے نمٹ نہیں پا ‏رہے۔

بھارت میں کورونا کی بگڑتی صورت حال کے بعد صحت کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے، اسپتال میں ‏اسٹریچر نہ ہونے کے باعث مجبوراً مریض کو اسکوٹی کا سہارا لینا پڑا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں کورونا کے ممکنہ مریض کو اسپتال کے ‏انتہائی نگہداشت وارڈ(آئی سی یو) سے ایمبولنس تک لے جانے کے لیے مریض کو اسکوٹی پر بٹھایا ‏گیا۔

ادھر کولکتا میں کورونا سے ہلاک ہونے والے شخص کی لاش کو ایمبولینس ڈرائیور سڑک پر چھوڑ ‏گیا جس پر عوام میں سخت غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

ڈرائیور کی اس حرکت پر مقامی لوگوں نے احتجاج کیا۔ ایمبولینس ڈرائیور پی ایس میڈیکل کالج ‏اینڈ اسپتال کا بتایا جاتا ہے۔

ورثاء نے ڈرائیور کی اس حرکت پر شرمناک قرار دیتے ہوئے اسپتال انتظامیہ سے معافی کا مطالبہ کیا ‏ہے۔ اہلِ خانہ کا کہنا ہے کہ اگر انتظامیہ نے معافی نہ مانگی تو وہ مقدمہ درج کروائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں