The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں پہلی بار خواجہ سرا کی محکمہ پولیس میں بھرتی

راولپنڈی : خواجہ سراؤں کے مسائل سننے اور ان کے حل کے لئے راولپنڈی کے خواتین پولیس اسٹیشن میں خواجہ سرا کو تعینات کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملکی تاریخ میں پہلی بار کسی خواجہ سرا کو محکمہ پولیس میں تعینات کیا گیا ہے، جس کا مقصد خواجہ سراؤں کے مسائل کے حل اور ان کو انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا پے۔

اس حوالے سے راولپنڈی کے خواتین پولیس اسٹیشن میں ایک خواجہ سرا کو بھرتی کیا گیا ہے، راولپنڈی پولیس حکام کے مطابق ریم شریف نامی خواجہ سرا کو تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعد بھرتی کیا گیا ہے۔ یہ پاکستان کی تاریخ میں پہلا واقعہ ہے کہ جب کسی خواجہ سرا کو پولیس محکمہ میں بھرتی کیا گیا ہے۔

ریم شریف کو تھانے میں خواجہ سراؤں کے مسائل کو حل کرنے کے لئے خصوصی تربیت بھی دی گئی ہے، اس کے علاوہ وہ دیگر خواتین کے معاملے کو بھی دیکھیں گے۔

محکمہ پولیس کے مطابق ریم شریف کی تعیناتی راولپنڈی میں واقع خواتین پولیس اسٹیشن میں ہوگی اور انہیں وہی یونیفارم دیا جائے گا جو وہاں دیگر خواتین پولیس اہلکاروں کو دیا جا تا ہے۔

اس کے علاوہ پاکستان میں قانون کے مطابق ڈیسک پر اپنی ذمہ داری کو نبھانے والے پولیس اہلکاروں کا پے اسکیل 14 واں ہوتا ہے۔ ایسے میں اس خواجہ سرا کی تنخواہ بھی اسی کے مطابق مقرر ہوگی۔ ریم شریف اس سے قبل پاکستان میں ٹرانسجینڈرز کے حقوق کے لئے بڑے سرگرم رہے ہیں۔

واضح رہے کہ سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو نے پاکستان میں خواتین پولیس اسٹیشن بنانے کی منطوری دی تھی اور راولپنڈی میں خواتین کا پہلا پولیس اسٹیشن قائم کیا گیا تھا جبکہ اس سے قبل ہر تھانے میں دو خواتین پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا جاتا تھا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان کے باقی شہروں میں بھی مرحلہ وار خواتین پولیس اسٹیشن میں خواجہ سراؤں کو بھرتی کیا جائے گا۔ پاکستان میں خواجہ سراؤں کی تعداد ساڑھے دس ہزار ہے، جس میں راولپنڈی میں سب سے زیادہ 3 ہزار کے قریب خواجہ سرا آباد ہیں۔

ایسے میں راؤلپنڈی میں خواجہ سراؤں کی جانب سے یہ مطالبہ کافی دنوں سے کیا جا رہا تھا جسے پایہ تکمیل تک پہنچا دیا گیا ہے۔

یاد رہے اس سے قبل پاکستان بیت المال نے پشاور سے تعلق رکھنے والے سائٹ انجینئر خواجہ سرا ڈولفن ایان کے پی ایچ ڈی تک تعلیمی اخراجات اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔

ایان نے معاشرتی رویوں کے باعث تعلیم ادھوری چھوڑ کر ناچ گانے کو اپنانے کے متعلق اپنی ویڈیو سوشل میڈیا پر اپلوڈ کی تھی جو وائرل ہوگئی۔

خوش شکل اور ہونہار خواجہ سرا کی تعلیم پوری کرنے کی خواہش کی ویڈیو منظرعام پر سماجی تنظیموں کے ساتھ ساتھ بیت المال کی نظر میں بھی آگئی۔ بتایا گیا ہے کہ پاکستان بیت المال کے چیئرمین عون عباس نے اسلام آباد آکر ڈولفن ایان سے ملاقات کی اور ان کی امداد کا اعلان کیا۔

پاکستان کے پہلے خواجہ سرا نے عالمی اعزاز تک رسائی حاصل کر لی

شیش میل رائٹس آف پاکستان کی سربراہ الماس بوبی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں اس وقت خواجہ سراؤں کی تعداد ساڑھے دس ہزار کے قریب ہے، تمام بھیک مانگنے والے خواجہ سرا نہیں ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں