The news is by your side.

Advertisement

کروناوائرس کا علاج: 72 گھنٹوں میں مریضوں کی صحت یابی کا دعویٰ

لندن: برطانیہ میں کروناوائرس کا ایسا علاج دریافت کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے جس کے ذریعے مہلک وائرس کا مریض صرف 3 دن کے اندر اندر صحت یاب ہوسکتا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا کو شکست دینے والے مریضوں کے ’’بلڈ پلازمہ‘‘ کی مدد سے دیگر مریضوں کا علاج اور تین دن کے اندر صحت یابی بھی ہوسکتی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کرونا کے صحت یاب مریضوں کی جانب سے عطیہ کردہ خون دیگر مریضوں کی صحت یابی کا سبب بن سکتا ہے۔ اس طریقہ علاج کو ’’کونویلسنٹ پلازمہ تھیرپی‘‘ کا نام دیا گیا ہے۔ جبکہ برطانیہ، امریکا اور چین میں اس پر عملی اقدامات بھی کیے جارہے ہیں۔

روس نے کروناوائرس کا علاج دریافت کرنے کا دعویٰ کردیا

’’اس پلازمہ تھیرپی کی مدد سے چین میں کئی مریض تین دن میں صحت یاب بھی ہوئے۔ کرونا کو شکست دینے والے مریضوں کے ایمیون سسٹم میں خاص طور پر اینٹی باڈیز ہوتی ہیں، یہی وجہ ہے کہ ان کے خون کے ذریعے دیگر مریضوں کو مہلک وائرس سے لڑنے میں مدد ملتی ہے‘‘۔

اس طرح کے طریقہ علاج کو سب سے پہلے 100 سال قبل اسپین میں ایک وبائی مرض کے خلاف اپنایا گیا تھا۔ جبکہ حالیہ طور پر چین، امریکا اور برطانیہ میں بھی اسے عملی جامع پہنایا جارہا ہے اور مثبت نتائج بھی سامنے آرہے ہیں۔

خیال رہے کہ مذکورہ علاج کے حوالے کوئی تصدیقی مراسلہ کسی بھی عالمی ادارے کی جانب سے سامنے آیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں