The news is by your side.

ٹرائل کورٹس ، 116 مقدمات حل، 2 مجرمان کو سزائے موت

راولپنڈی: چیف جسٹس آف پاکستان کی ہدایت پر بنائے جانے والے ماڈل کورٹس کی دو روزہ کارکردگی رپورٹ سامنے آگئی، جس کے مطابق تیز ترین سماعتوں کے ذریعے 116 مقدمات نمٹائے گئے۔

تفصیلات کے مطابق  مانیٹرنگ سیل کےڈی جی نے ملک بھرکی ماڈل کورٹس کی دوسرےروزکی کارکردگی رپورٹ تیار کر کے چیف جسٹس آف پاکستان کوجمع کرادی۔

ملک کی116ماڈل کورٹس کےمانیٹرنگ سیل کےڈائریکٹر نے رپورٹ جمع کرائی جس کے مطابق صرف آج کے تیز ترین ٹرائل کے ذریعے 116 مقدمات کے فیصلے سنائے گئے۔

مزید پڑھیں: ہم نےجھوٹےگواہان کودفن کردیا،اب جھوٹ بولنے والوں کوبھی سزاہوگی، چیف جسٹس

رپورٹ کے مطابق  ٹرائل کورٹ میں 43قتل کےمقدمات کےفیصلے سنائے گئے جبکہ 73منشیات کیسز نمٹائے گئے، مجموعی طور پر 56 لاکھ5 ہزار 624 روپے کے جرمانےعائدکئےگئے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملک بھر میں سماعتوں کے دوران جرم ثابت ہونے پر 2ملزمان کوسزائےموت سنائی گئی۔

ٹرائل کورٹ اسلام آباد میں ہونے والی سماعت میں قتل کےچار، منشیات کےایک مقدمےکافیصلہ ہوا، اسی طرح پنجاب میں 12 قتل اور 33 منشیات، خیبرپختونخوا میں7قتل،15منشیات، سندھ میں 6 قتل 7 منشیات، بلوچستان میں 14 قتل اور 17 منشیات کے فیصلے سنائے گئے۔

ٹرائل کورٹس نے ملک بھرسے 13 ملزمان کوعمرقیدکی سزاسنائی جبکہ دورانِ سماعت 662گواہان کے بیانات قلم بند کیے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں