The news is by your side.

Advertisement

شاہ محمود قریشی کی زیر صدارت سہ ملکی مذاکرات کے تیسرے دور کا آغاز

اسلام آباد : پاکستان، چین اور افغانستان کے درمیان سہ ملکی مذاکرات کا تیسرا دور وزارت خارجہ میں شروع ہوگیا، بھارتی دورہ منسوخ کرنے والے چینی وزیر خارجہ پاکستان پہنچ گئے۔

تفصیلات کے مطابق سہ ملکی مذاکرات کے تیسرے دور کا آغاز وزارت خارجہ میں ہوگیا، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی زیر صدارت مذاکرات میں چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی اور افغانستان کے وزیرخارجہ صلاح الدین ربانی اپنے اپنے وفود سمیت شریک ہیں۔

بھارتی دورہ منسوخ کرنے والے چینی وزیرخارجہ وانگ ژی سہہ ملکی مذاکرات میں شرکت کیلئے پاکستان پہنچے۔ سہ ملکی مذاکرات کے ایجنڈے میں سیاسی تعلقات، افغان امن عمل اور سیکیورٹی تعاون شامل ہے جبکہ اقتصادیات، رابطہ سازی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ، سیکیورٹی اور انسداد دہشت گردی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا گیا ہے۔

تینوں وزرائےخارجہ نے افغانستان کے مسئلےکے جلد پرامن حل کی امید کا اظہار کیا، مذکرات میں افغانستان میں امن کیلئے افغان قیادت کی سربراہی میں کاوشوں کی حمایت کا عندیہ دیا گیا، اس کے علاوہ پاک،چین وزرائےخارجہ نے افغانستان سے کثیرالجہتی شعبوں میں تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

واضح رہے کہ پاک، چین، افغان سہ فریقی مذاکرات کا آغاز 2017ء میں ہوا تھا۔ پاکستان ان مذاکرات کو اعتماد سازی، ترقی، تعاون اور رابطے کے لئے اہمیت دیتا ہے۔

یاد رہے کہ افغانستان میں امن کے قیام اور دونوں ممالک کے مابین عدم اعتماد کی فضا ختم کرنے کے لیے جون میں مری بھوربن میں پہلی افغان امن کانفرنس کا انعقاد کیا گیا تھا جس میں پاک افغان تعلقات پر پروپیگنڈا یا منفی تاثر پھیلانے کے حوالے سے معاملات دیکھے گئے تھے۔

اپریل میں وزیر خارجہ شاہ محمود نے بیجنگ میں چین کے وزیر خارجہ مسٹر وانگ ژی سے ملاقات کی تھی، اس ملاقات میں پاک چین تعلقات، سی پیک، خطے کی سیکیورٹی سمیت افغان امن عمل پر بھی بات چیت ہوئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں