The news is by your side.

Advertisement

فرانس جرمنی اور کینیڈا نے ڈونلڈ ٹرمپ پر ماسک کی ڈکیتی کا الزام عائد کردیا

فرانس اور جرمنی کے بعد کینیڈا نے بھی امریکا پر کورونا سے بچاؤ کے وسائل پر ڈاکہ ڈالنے کا الزام عائد کیا ہے, حکومت کا کہنا ہے کہ واشنگٹن کو اپنے اس ناجائز اور غیر قانونی اقدام کی تلافی کا انتظار کرنا چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق ایک روز قبل جرمنی نے امریکا پر فیس ماسک کی قزاقی کا الزام عائد کیا تھا, الزام یہ تھا کہ کورونا وائرس کے خلاف دو لاکھ حفاظتی فیس ماسک بنکاک میں چرا لیے گئے تھے۔

کورونا وائرس پھیلنے کے بعد مغربی دنیا بالخصوص امریکا نے سبھی بین الاقوامی اصول وضوابط اور اخلاقی و انسانی اقدار کو بالائے طاق رکھتے ہوئے حتی اپنے مغربی اتحادیوں کے ساتھ بھی بے رحمی کا ثبوت دینا شروع کر دیا ہے۔

اسی دوران فرانس اور جرمنی کے بعد کینیڈا نے بھی امریکا پر کورونا سے بچاؤ کے وسائل پر ڈاکہ ڈالنے کا الزام لگایا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق کینیڈا کے لئے ارسال کئے جانے والے ماسک اور وینٹیلیٹر مشینوں کی کھیپ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حکم پر ضبط کر لی گئی .

کینیڈا کی حکومت نے امرکی صدر کے اس عمل پر  سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ واشنگٹن کو اپنے اس ناجائز اور غیر قانونی اقدام کی تلافی کا انتظار کرنا چاہئے۔

رپورٹ کے مطابق وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے کہا ہے کہ کنیڈا کے ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کے لئے کورونا وائرس سے بچاؤ کے وسائل اور وینٹیلیٹر مشینوں کی کھیپ ضبط کر لینا امریکی حکومت کی بہت بڑی غلطی ہے، انہوں نے کہا کہ امریکا کو معلوم ہونا چاہئے کہ کورونا وائرس سے مقابلے کے لئے اس کو کینیڈا کی میڈیکل ایڈ اور طبی تعاون کی ضرورت ہے۔

بتایا گیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے زمانہ جنگ کے قوانین کے تحت ان وسائل کو ضبط کرلینے کے احکامات صادر کئے ہیں۔ اِن ہی احکامات کے تحت جرمنی کے لئے ارسال کی جانے والی کورونا وائرس سے بچاؤ کے وسائل کی کھیپ بھی ضبط کرلی گئی ہے جس کو برلن نے امریکی حکومت کی جدید ڈکیتی کا نام دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں