The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کا افغانستان کا غیراعلانیہ دورہ، طالبان سے مذاکرات کی بحالی کا اعلان

کابل: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے افغانستان کا غیراعلانیہ دورہ کیا، اس دوران انہوں نے افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی اور خطے کی حالیہ صورت حال پر تبادلہ خیال کیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ’’تھینکس گیونگ‘‘ دن کے موقع پر افغانستان کا اچانک دورہ کیا اور وہاں موجود امریکی فوجیوں سے ملاقاتیں کیں اور تصویریں بھی بنوائیں،ٹرمپ نے امریکی فوجیوں کے ساتھ 2 گھنٹے سے زائد وقت گزارا۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق ٹرمپ اور افغان صدر اشرف غنی کے درمیان ملاقات کے دوران افغان امن عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا اور طالبان سے مذاکرات بھی زیرغور آئے، امریکی صدر نے خطے میں قیام امن پر زور دیا۔

ٹرمپ نے دورے کے موقع پر اعلان کیا کہ طالبان کے ساتھ امن مذاکرات دوبارہ شروع کر رہے ہیں اور افغانستان میں موجود امریکی فوجیوں کی تعداد میں کمی بھی کی جائے گی، طالبان مذاکرات کی بحالی چاہتے ہیں، ان سے دوبارہ مذاکرات شروع کریں گے۔

انہوں نے طالبان پر بھی دباؤ ڈالا کہ اس بار حقیقی ڈیل ہونی چاہیئے۔

طالبان رہنما کی ایرانی وزیرخارجہ سے ملاقات، افغان امن عمل پر گفتگو

دوسری جانب قطر میں طالبان کے سیاسی دفتر کے سربراہ عبدالغنی برادر نے اپنے وفد کے ہمراہ حال ہی میں ایران کا دورہ کیا، اور ملکی وزیرخارجہ جواد ظریف سے ملاقات کی اس دوران افغان امن عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ افغانستان میں امن واستحکام کی خاطر امریکی صدر نے گذشتہ ہفتے طالبان سے ایک مرتبہ پھر مذاکرات کا عمل دوبارہ شروع کرنے کا عندیہ دیا تھا، جس پر اب عمل درآمد کیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں