The news is by your side.

Advertisement

ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن سے استعفیٰ لے لیا

واشنگٹن: طالبان سے مذاکرات کی معطلی کے آفٹر شاکس سامنے آنے لگے، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے قومی سلامتی کے مشیر  جان بولٹن سے استعفیٰ لے لیا.

تفصیلات کے مطابق وائٹ ہاؤس میں بڑی تبدیلی آئی ہے، جان بولٹن اب امریکا کے قومی سلامتی کے مشیر نہیں‌ رہے.

اس ضمن میں امریکی صدر نے اپنے ٹویٹ میں تفصیلات فراہم کی ہیں. انھوں نے لکھا کہ میں‌ نے گزشتہ رات جان بولٹن کو آگاہ کیا تھا کہ وائٹ ہاؤس کو اب ان کی خدمات درکار نہیں کیوں.

ٹرمپ کو کہنا تھا کہ مجھے جان بولٹن کی بہت ساری تجاویز سے اختلاف تھا، میں نے گزشتہ روز جان بولٹن سے استعفیٰ طلب کیا تھا جو آج صبح مجھے مل گیا۔

مزید پڑھیں: امریکی صدر نے مسئلہ کشمیر پر ایک بار پھر ثالثی کی پیشکش کردی

ابھی اگلے مشیر قومی سلامتی کا نام سامنے نہیں آیا، توقع کی جارہی ہے کہ اگلے سات دن میں نئے نام کا اعلان کیا جائے گا.

جان بولٹن کو اپریل 2018 میں ڈونلڈ ٹرمپ نے قومی سلامتی کا مشیر مقرر کیا تھا، وہ 520 دن اس عہدے پر فائز رہے.

خیال رہے کہ جون بولٹن کو لاتے ہوئے کئی دعوے کیے گئے تھے، عام خیال ہے کہ ٹرمپ اور جان بولٹن میں‌ اختلاف طالبان سے مذاکرات کے معاملے پر سامنے آئے. بولٹن طالبان سے مذاکرات کے بھی خلاف تھے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں