The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ نے اپنی صدارت کے آخری گھنٹے میں کون سا اہم کام کیا؟

واشنگٹن: امریکا کے سابق صدر ٹرمپ نے جاتے جاتے وائٹ ہاؤس کے سابق ایڈوائزر اسٹیوبینن سمیت کئی لوگوں کی سزائیں معاف یا اُن میں تخفیف کا اعلان کردیا۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق ٹرمپ نے اپنے عہدے کے آخری گھنٹے میں معافی اور سزاؤں میں تخفیف کے حوالے سے احکامات جاری کیے جس کے بعد متعدد شخصیات کو بڑا ریلیف مل گیا۔

وائٹ ہاؤس حکام کے مطابق ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس سابق ایڈوائزر اسٹیوبینن سمیت 73 افراد کو معاف کرنے کا اعلان کیا۔

سینئر ایڈمنسٹریشن آفیشل کے مطابق اسٹیوبینن پر سرحدی دیوار کے فنڈز میں فراڈ کا الزام تھا۔ اس کے علاوہ صدرٹرمپ نے مزید 70 مجرموں کی سزاؤں میں کمی بھی کی۔

مزید پڑھیں: سابق امریکی صدر وائٹ ہاؤس کی کھڑکی سے کود کر کیوں بھاگے؟

خبررساں ادارے کی رپورٹ نے ٹرمپ انتظامیہ کے سینئر عہدیدار کے بیان کو بنیاد بنا کر لکھا کہ ’ٹرمپ نے غیر ملکی لابنگ قوانین کی خلاف ورزی کے جرم میں گزشتہ سال سزا پانے والے ایلیوٹ بروئی، سابق ڈیٹروئٹ کے میئر کوامے کل پیٹرک کی 28 سالہ قید کی سزا کو بھی ختم کردیا‘۔

اس کے علاوہ ٹرمپ نے اسلحہ رکھنے کے جرم میں معروف امریکی موسیقار  اور ریپر کوڈیک بلیک کی سزا بھی معاف کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں