تارکین وطن کے بچوں کو والدین سے جدا کرنے کا سلسلہ جلد ختم ہوجائے گا: امریکی صدر
The news is by your side.

Advertisement

تارکین وطن کے بچوں کو والدین سے جدا کرنے کا سلسلہ جلد ختم ہوجائے گا: امریکی صدر

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ عندیہ دیا ہے کہ تارکین وطن کے بچوں کو ان کے والدین سے جدا کرنے کا سلسلہ جلد ختم کردیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا میں غیر قانونی طور پر سرحد پار کرنے والے تارکین وطن کو ان کے بچوں سے جدا رکھا جاتا ہے جس کے باعث دنیا بھر میں امریکا کی اس پالیسی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اشارہ دیا ہے کہ امریکا کی میکسیکو کے ساتھ سرحد پر مہاجر بچوں کو ان کے والدین سے جدا کر دینے کا سلسلہ جلد ہی ختم کر دیا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ نئی حکمت عملی تیار کی جارہی ہے جس کے بعد تارکین وطن اور کے بچوں کو ایک ہی ساتھ رکھا جائے گا اس حوالے سے جلد کسی حکم نامے پر دست خط کر دیں گے۔


تارکین وطن کی بچوں سے علیحدگی، ٹرمپ کو شدید احتجاج کا سامنا


عالمی ماہرین کے مطابق ممکنہ طور پر جنوبی سرحد پر غیر قانونی طریقے سے داخل ہونے والے مہاجرین کو اپنے بچوں کے ساتھ رہنے کی اجازت دی جا سکتی ہے، جو ایک مثبت عمل ہے جس سے امریکی فیصلے کو کافی تقویت ملے گی۔

دوسری جانب میکسیکو نے تارکین وطن سے متعلق امریکی رویے کو غیر انسانی قرار دیا ہے، امریکی صدر ٹرمپ کے تارکین وطن کو داخلے سے روکنے اور مہاجرین بچوں کو ان کے والدین سے جدا کرنے کے خلاف نیویارک سمیت امریکا بھر میں احتجاج شروع ہوچکا ہے۔

واضح رہے کہ امریکی خاتون اول میلانیا ٹرمپ نے امریکی صدر کی میکسیکو مہاجرین سے متعلق پالیسی پر کہا تھا کہ بچوں کو ان کے والدین سے جدا کرنے پر نفرت ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں